فلم ساز سبھاش گھائے جنسی ہراساں کے الزام سے بری

فلم ساز سبھاش گھائے جنسی ہراساں کے الزام سے بری
ممبئی (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 06 دسمبر2018ء) رواں برس ستمبر میں بولی وڈ اداکارہ تنوشری دتہ نے اداکار نانا پاٹیکر پر جنسی طور پر ہراساں کرنے کا الزام لگا کر ’می ٹو‘ مہم کا آغاز کیا تھا۔تنوشری دتہ کے بعد کنگنا رناوٹ سمیت کئی اداکارائیں سامنے آئیں اور انہوں نے اپنے ساتھ ہونے والی ناانصافی اور نازیبا رویوں کے خلاف کھل کر بات کی۔نہ صرف اداکارائیں اور ماڈلز بلکہ بھارت کی خواتین صحافی بھی سامنے آئیں اور انہوں نے اپنے ساتھ ہونے والے نازیبا واقعات پر کھل کر بات کی۔

خواتین کو جنسی طور پر ہراساں کرنے کا الزام جہاں بولی وڈ ہدایت کار وکاس بہل پر لگا، وہیں ہدایت کار سبھاش گھائے پر بھی الزامات عائد کیے گئے۔سبھاش گھائے پر رواں برس اکتوبر میں ایک خاتون اور ماڈل و اداکارہ کیٹ شرما نے بھی جنسی طور پر ہراساں کرنے کا الزام عائد کیا تھا۔

(جاری ہے)

سماجی کارکن ماہمیا ککرجی نے اپنی ٹوئیٹس میں دعویٰ کیا تھا کہ 73 سالہ سبھاش گھائے نے ایک خاتون کو منشیات دینے کے بعد ان کا ریپ کیا تھا۔

اداکارہ نے سبھاش گھائے کے خلاف رواں برس اکتوبر میں ممبئی کے وروسوا تھانے میں شکایت بھی درج کروائی تھی، تاہم بعد ازاں اداکارہ نے شکایت واپس لی تھی۔گزشتہ ماہ 24 نومبر کو خبر سامنے ا?ئی کہ کیٹ شرما نے سبھاش گھائے کے خلاف درج کرائی گئی شکایت واپس لے لی۔اداکارہ نے شکایت واپس لینے کا سبب بتاتے ہوئے کہا کہ ان پر اپنی بیمار والدہ اور خاندان کی ذمہ داری ہے، تاہم جب سے انہوں نے سبھاش گھائے پر الزام عائد کیا ہے اس کے بعد سے ان کی والدہ خاصی پریشان ہیں۔

اور اب یہ خبر سامنے آئی ہے کہ کیٹ شرما کی جانب سے شکایت کی درخواست واپس لیے جانے کے بعد پولیس نے سبھاش گھائے کے خلاف جنسی طور پر ہراساں کا مقدمہ ختم کرتے ہوئے انہیں بری کردیا۔ شوبز ویب سائیٹ کی خبر کا حوالہ دیتے ہوئے بتایا کہ پولیس نے فلم ساز کے خلاف مقدمہ ختم کرتے ہوئے انہیں کلین چٹ دے دی۔۔

مزید متعلقہ خبریں پڑھئیے‎ :

وقت اشاعت : 06/12/2018 - 22:35:28

Your Thoughts and Comments