ماہ صیام میں اشیائے خوردونوش کی قیمتوں میں 50فیصد تک اضافہ قابل تشویش ہے ‘ مسرت چیمہ

موثر میکنزم نہ ہونے کی وجہ سے عوام گراں فروشوں کے استحصال کا شکار ہیں‘ ممبر ویمن ونگ ایگزیکٹو کونسل

جمعہ مئی 16:16

لاہور(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 18 مئی2018ء) تحریک انصاف ویمن ونگ ایگزیکٹو کونسل کی ممبر مسرت جمشید چیمہ نے کہا ہے کہ رمضان المبارک میں مختلف اشیائے خوردونوش کی قیمتوں میں 50فیصد تک اضافہ قابل تشویش ہے ،ضلعی انتظامیہ صرف رمضان بازاروں تک توجہ مرکوز کرنے کی بجائے اوپن مارکیٹوں کے حالات کابھی جائزہ لے ۔ اپنے ایک بیان میں انہوںنے کہا کہ پنجاب حکومت کا عوام کو رمضان المبارک میں ریلیف دینے کیلئے متحرک ہونا صرف فوٹو سیشن تک محدود ہے ۔

(جاری ہے)

اگر یہ عملی طور پر ہوتا تو ماہ مقدس کے آغاز پر ہی مختلف اشیائے خوردونوش کی قیمتوںمیں 50فیصد تک اضافہ نہ ہوتا۔ انہوں نے کہا کہ رمضان بازاروں میں بھی بعض ضروری اشیائے خوردونوش دستیاب ہی نہیں جبکہ اوپن مارکیٹوں میں دکاندار من مانے نرخوں پر فروخت کر رہے ہیں ۔ ضلعی انتظامیہ چند رمضا ن بازاروں تک توجہ مرکوز نہ کرے بلکہ اوپن مارکیٹوں کے دورے بھی کئے جائیں تاکہ عوام کو ریلیف مل سکے ۔ مسرت چیمہ نے کہا کہ تجربہ کارحکمران عوام کو ریلیف اور سہولیات دینے کیلئے موثر میکنزم نہیں بنا سکے جس کی وجہ سے عوام ماہ مقدس میں بھی گراں فروشوں کے استحصال کا شکار ہیں۔