لیڈز ٹیسٹ میں ڈیبیو کرنے والے عثمان صلاح الدین کیلئے نکاح کے فوری بعد بہت بڑی خوشخبری

اہلیہ کو خوش قسمتی کی علامت تصور کرتا ہوں،عثمان صلاح الدین، میرا نکاح ہوتے ہی میرا ٹیم میں نام آیا، ٹیسٹ کرکٹر بننے کی ایسی خوشی ہے جو بیان نہیں کرسکتا، کوشش کروں گا کہ اچھا پرفارم کروں،پاکستان کیلئے لمبی کرکٹ کھیلنا چاہتا ہوں،انگلینڈ کیخلاف ڈیبیو کرنے والے عثمان صلاح الدین کی میڈیا سے گفتگو

جمعہ جون 18:02

لیڈز ٹیسٹ میں ڈیبیو کرنے والے عثمان صلاح الدین کیلئے نکاح کے فوری بعد ..
لیڈز(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 01 جون2018ء) پاکستان کی جانب سے لیڈز ٹیسٹ میں اپنے کیریئر کا آغاز کرنے والے عثمان صلاح الدین بھی اپنے اہلیہ کو خوش قسمتی کی علامت تصور کرتے ہیں۔ہیڈنگلے میں میڈیا سے گفتگوکرتے ہوئے عثمان صلاح الدین نے کہا کہ ہر کامیاب شخص کے پیچھے عورت کا ہاتھ ہوتا ہے،،میرا چندماہ پہلے نکاح ہوا تھا، جلد رخصتی ہونے والی ہے، میری بیوی میرے لیے خوش قسمت ثابت ہوئیں، میرا نکاح ہوتے ہی میرا ٹیم میں نام آیا، ٹیسٹ کرکٹر بننے کی ایسی خوشی ہے جو بیان نہیں کرسکتا، کوشش کروں گا کہ اچھا پرفارم کروں۔

ان سے سوال کیا گیا کہ سسرال نے رخصتی کے لیے ٹیسٹ کرکٹر بننے کی شرط تو نہیں رکھی اس پر قہقہہ لگا۔بلے باز نے کہا کہ رخصتی میں تاخیر کی وجہ یہ ہے کہ میری بیوی پڑھ رہی ہے، تعلیم ختم ہوتے ہی رخصتی ہوجائے گی، بیوی کے امتحانات کا منتظر ہوں۔

(جاری ہے)

انگلینڈ کے خلاف لیڈز ٹیسٹ میں اپنے کیریئر کا آغاز کرنے والے عثمان صلاح الدین کا کہنا ہے کہ میرا ہدف صرف ٹیسٹ کرکٹ کھیلنا نہیں ہے۔

پاکستان کے لئے لمبی کرکٹ کھیلنا چاہتا ہوں، انضی بھائی اور یونس خان نے جس طرح ٹیسٹ میچوں میں دس ہزار رنز بنائے تھے اسی طرح پاکستان کے لئے کوئی سنگ میل عبور کرنا چاہتا ہوں، میں ایک میچ کیلئے نہیں کھیلوں گا، پاکستان کے لئے زیادہ سے زیادہ کھیلنا چاہتا ہوں، محض ٹیسٹ کرکٹر بننا میرا ہدف نہیں ہے۔عثمان صلاح الدین نے کہا کہ میں انگلینڈ میں نیو کاسل اور مڈلینڈ میں پریمیئر لیگ کھیل چکا ہوں، اس لیگ کا فائدہ مجھے یہ ہوا کہ میں نے لیسٹر کے خلاف 69 رنز بنائے۔

انہوں نے کہا کہ یہ میرے لئے یادگار لمحہ تھا، میں اپنے کیریئر کے دوران محمد یوسف، انضمام الحق، ویرات کوہلی، جوروٹ اور موجودہ ٹیم کے اسد شفیق اور بابر اعظم سے متاثر ہوں اور ان کی بیٹنگ کو پسند کرتا ہوں۔انہوں نے کہا کہ 2010میں ون ڈے ڈیبیو کرنے کے بعد مجھے مایوسی نہیں ہوئی ٹیم انتظامیہ مجھے ساتھ رکھ رہی تھی اور نیٹ پر میری خامیوں پر کام ہوتا رہا۔ان کا مزید کہنا تھا کہ انگلش کنڈیشن میں لیٹ اسٹروک کھیلنے والے کامیاب ہوتے ہیں، لیگ کے تجربے کی بنیاد پر مجھے یہاں کی کنڈیشنز میں کھیلنے کا موقع مل رہا ہے اور مجھے کنڈیشنز سمجھنے میں آسانی ہورہی ہے۔عثمان صلاح الدین کا کہنا ہے کہ نکاح ہوتے ہی میری قسمت پلٹ گئی۔