کلرک نے دوستوں کے ہمراہ لیڈی وارڈن کو نا معلوم جگہ لے جا کر زیادتی کا نشانہ بنا ڈالا

پولیس نے مقدمہ درج کر کے ملزم شاہد کو حراست میں لے لیا

Muqadas Farooq مقدس فاروق اعوان جمعرات جون 16:06

کلرک نے دوستوں کے ہمراہ لیڈی وارڈن کو نا معلوم جگہ لے جا کر زیادتی کا ..
لاہور(اُردو پوائنٹ تازہ ترین اخبار۔ 14 جون 2018ء) : :ایک اور حوا کی بیٹی کی عزت تار تار ہو گئی۔کلرک نے دوستوں کے ہمراہ لیڈی وارڈن کو نا معلوم جگہ لے جا کر زیادتی کا نشانہ بنا ڈالا۔ پولیس نے مقدمہ درج کر کے ملزم شاہد کو حراست میں لے لیا۔قومی اخبار کی رپورٹ کےمطابق سی ٹی او آفس لانسنگ برانچ میں کام کرنے والی لیڈی وارڈن کے ساتھ کلرک نے زیادتی کی ہے۔

پولیس نے مقدمہ درج کر کے ملزم کوحراست میں لے لیا ہے۔بتایا گیا ہے کہ سٹی ٹریفک پولیس آفس لانسنگ برانچ میں کام کرنے والی لیڈی وارڈن آمنہ نے تھانہ ریس کورس میں درخواست دی ہے کہ کلرک شاہد نے پیسے دینے کے بہانے مجھے گھر بلایا اور اپنے ساتھ نا معلوم ساتھیوں کے ساتھ مل کر گن پوائنٹ پر گاڑی میں بٹھا جر نا معلوم جگہ لے گیا۔

(جاری ہے)

اور میرے ساتھ زیادتی کی اور تشدد کا نشانہ بنایا۔

درخواست گزار نے موقف اختیار کیا ہے کہ اس کا بھائی ارشد عمران شفیق آباد تھانے میں محرر ہے۔اس نے مجھے ڈرا دھمکا کر تھانے میں ایک سادہ سے کاغذ پر دستخط کروا لیے تھے۔اور وہ مجھے قانونی کاروائی کرنے کی صورت میں سنگین نتائج کی دھمکیاں دے رہا ہے۔لیڈی وارڈن کی درخواست پر تھانہ ریس کورس پولیس نے 288/18 مقدمہ درج کر لیا ہے۔جب کہ پولیس نے ملزم شاہد کو گرفتار کر لیا ہے۔

پولیس کا کہنا ہے کہ میڈیکل رپورٹ اور تفتیش کے بعد ہی اصل حقائق سامنے آئیں گے۔۔یاد رہے کہ معصوم لڑکیوں کے ساتھ زیادتی کے واقعات آئے روز پیش آتے رہتے ہیں تاہم قانون نافذ کرنے والے ادارے ان واقعات میں کمی اور روک تھام کے لیے کچھ بھی نہیں کر پا رہے۔میڈیا رپورٹس کے مطابق زیادتی کیس میں ملوث مجرموں میں سے اکثر ایسے مجرم ہوتے ہیں جنھیں مضبوط پشت پناہی حاصل ہوتی ہے جس کی وجہ سے ان کے خلاف کاروائی نہیں ہوتی اور وہ قانون کی گرفت سے آزاد ہوتے ہیں۔

متعلقہ عنوان :