تربیت کے بغیر تعلیم یافتہ آدمی بھی خطرناک ثابت ہوسکتا ہے، وائس چانسلر مولانا آزاد نیشنل اٴْردو یونیورسٹی

بدھ جولائی 10:30

نئی دہلی ۔ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 04 جولائی2018ء) بھارت میں مولانا آزاد نیشنل اٴْردو یونیورسٹی وائس چانسلر ڈاکٹر محمد اسلم پرویز نے کہا ہے کہ مسلم اقلیتی تعلیمی اداروں کی سب سے اہم ذمہ داری یہی ہے کہ وہ اپنے طلبہ میں خود اعتمادی کا احساس پیدا کریں تاکہ طالب علم انہیں درپیش چیلنجوں سے نمٹنے اور باقی دنیا کے ساتھ مسابقت کے قابل بن سکیں۔

مولانا آزاد نیشنل اٴْردو یونیورسٹی میں اعلیٰ تعلیم کے مسلم اقلیت زیر انتظام اداروں کے سربراہوں کے لیے انتظامی قیادت کے موضوع پر دسویں سالانہ اورینٹیشن پروگرام کے افتتاحی اجلاس سے خطاب میں انہوں نے کہا کہ ہمیں شکایت اور احتجاج کی مشترکہ نفسیات سے باہر نکلنا چاہیے۔ تربیت ہے تو تعلیم سودمند ہے ورنہ تربیت کے بغیر تعلیم یافتہ آدمی بھی خطرناک ثابت ہوسکتا ہے۔

(جاری ہے)

بھارت کے موجودہ حالات میں مسلم اقلیت کو درپیش مسائل کا حوالہ دیتے ہوئے انہوں نے کہا کہ ہمیں دیگر ابنائے وطن کے ساتھ تعلقات استوار کرنے چاہیے۔ اقلیتی شناخت پر مفاہمت کے بغیر اکثریتی برادری سے روابط ضروری ہیں۔ ڈاکٹر محمد اسلم پرویز نے کہا کہ باصلاحیت آدمی کو روزگار ضرور ملتا ہے، اساتذہ ذہن سازی اور شخصیت سازی پر توجہ دیں۔ انسانیت کا رشتہ بڑا مضبوط ہوتا ہے اورمحبت ہی فاتح عالم ہے۔