Dehati Larke Ne - Joke No. 1015

دیہاتی لڑکے نے - لطیفہ نمبر 1015

دیہاتی لڑکے نے شہر آ کر کچھ پیسے کما لئے تو باپ کو گھمانے پھرانے کے لئے شہر بلا لیا۔ دن بھر خوب سیر کرنے کے بعد لڑکے نے باپ کو مزید مرعوب کرنے کے لئے کرائے کے اپنے چھوٹے سے معمولی کمرے میں ٹھہرانے کی بجائے ایک شاندار ہوٹل کے کمرے میں ٹھہرایا۔ ہوٹل کے کمرے کے ساتھ اٹیچڈ باتھ تھا۔ صبح بیٹا باپ سے ملنے پہنچا تو داد طلب لہجے میں پوچھنے لگا۔ ”کمرہ کیسا ہے ابا جی! رات آرام سے گزری نا؟“ کمر ہ تو بہت اچھا ہے برخودار! بستر بھی بہت اچھا ہے باپ نے جمائیاں لیتے ہوئے جواب دیا۔ ”لیکن ایک بڑی مشکل تھی ۔غسل خانے کا راستہ میرے کمرے سے ہی ہو کر گزرتا تھا۔ میں بس اس خیال سے ساری رات جاگتا رہا کہ اگر ہوٹل میں ٹھہرے کسی بھی مسافر کو حاجت محسوس ہوئی یا کسی کا نہانے کا ارادہ ہوا تو وہ آ کر دروازہ کھٹھکھٹا دے گا۔“

مزید لطیفے

مرغا

Murgha

بے تحاشا بارش

betahasha barish

خشک کتاب

khushk kitab

ایک راہگیر نے فقیر سے کہا

aik rahageer ne faqeer se kaha

لیڈی ٹیچر

Lady teacher

شاعر

Shayar

لطیفے باپ بیٹے سے

latifay baap beti se

برٹش ایرویز

british airways

سینٹرل جیل

Central Jail

بھوکے کا کھانا

bhukay ka khana

قابل داد

qabil e daad

پروڈیوسر

producer

Your Thoughts and Comments