Gareeb Dehati - Joke No. 937

غریب دیہاتی - لطیفہ نمبر 937

کسی غریب دیہاتی کا لڑکا محنت مشقت کر کے کچھ پڑھ لکھ گیا اور باہر کے ملک چلا گیا۔ وہاں کچھ عرصے کے بعد سیٹل ہونے پر اس نے اپنے والد کو خط لکھا کہ ابا میں نے یہاں مکان کا بندوبست کر لیا ہے لہٰذا اب میری فیمی بھیج دیں ۔ غریب والد کو فیملی کے مطلب کا پتہ نہیں تھا۔ اس نے سکول سے واپس آتے ہوئے ایک لڑکے سے فیملی کا مطلب پوچھا تو اسے بھی پتہ نہ تھا مگر شرمندگی سے بچنے کے لئے اس نے فیملی کا مطلب بتایا۔ ”رضائی“ تو بوڑھے والد نے جواب میں لکھا ”بیٹا! تمہاری فیملی چوہے کھا گئے ہیں۔ تم وہاں نئی فیملی بنا لو۔

مزید لطیفے

مصنف ملازم سے

musanif mulazim se

آثار قدیمہ

Asar e qadima

ایک دوست دوسرے سے

aik dost dosray se

ٹھیکیدار

thekedar

دو دوست

Do dost

ایک سکھ

Aik sikh

ایک خاتون

Aik Khatoon

کرکٹ میچ

Cricket Match

شوہر اور بیوی

shohar aur biwi

میاں بیوی

main biwi

کیا تمہاری بیوی

kya tumhari biwi

ڈیڈی

Dady

Your Thoughts and Comments