Train - Joke No. 772

ٹرین - لطیفہ نمبر 772

ٹرین میں ایک صاحب اطمینان سے اپنی سیٹ پر بیٹھے ٹانگ پر ٹانگ رکھے اخبار پڑھ رہے تھے۔ اپنا بڑا سا بیگ انہوں نے بیچ راستے میں رکھا ہوا تھا مسافر اس سے ٹکڑا ٹکرا کر گر رہے تھے۔ ایک مسافر اس کو ایک طرف ہٹانے لگا تو وہ صاحب فوراً اخبار چھوڑ کر اسے روکتے ہوئے بولے۔”اے میاں! یہ کیا کر رہے ہیں؟ بیگ کو یہیں رہنے دو۔“ جناب! لوگ اس سے ٹکرا ٹکرا کر گر رہے ہیں۔ آپ اس کو ایک طرف رکھ دیں یا مجھے رکھنے دیں۔ مسافر نے شائستگی سے کہا۔”ہرگز نہیں…وہ صاحب فیصلہ کن لہجے میں بولے۔ اسے یہیں رکھا رہنے دو۔ میں بھلکڑ آدمی ہوں۔ اگر لوگ اس بیگ سے ٹکڑا ٹکڑا کر نہیں گریں گے تو مجھے اندیشہ ہے کہ میں اسے ٹرین میں ہی بھول جاوٴں گا۔

مزید لطیفے

بیمہ ایجنٹ

bima agent

شرافت

sharafat

ایک خاتون

Aik khatoon

منور ظریف

munawar zarif

آزمائش کی کسوٹی

azmaish ki kasoti

بیٹے کی پٹائی

Bete Ki Pitai

ایک بادشاہ

Aik badshah

گاوٴں میں بختو لوہار نے

Gaoon Main bakhtoo lohaar ne

ایک دوست

Aik dost

سوئی دھاگہ

Sui dhaga

ریل میں سفر

rail mein safar

مریض ڈاکٹر سے

mareez doctor se

Your Thoughts and Comments