بچے نے پالتو مچھلی کو پاس سلانے کے لیے ٹینک سے نکال کر مار دیا

بچے نے  پالتو مچھلی کو پاس سلانے کے لیے ٹینک سے نکال کر مار دیا

ایک چھوٹے بچے نے حادثاتی طور پر اپنی پالتو گولڈ فش کو ٹینک سے نکال لیا تاکہ اسے اپنے پاس سلا سکے۔
چار سالہ ایوریٹ ہاملین نے کرسی پر چڑھ کر ٹینک سے  اپنی نیمو نامی مچھلی کو  نکالا اور پکڑ کر اپنے ساتھ بستر پر لے گیا۔ جب ایوریٹ کی ماں نے اسے دیکھا تو وہ مردہ مچھلی کو ہاتھ میں  پکڑے سو رہا تھا۔ ایوریٹ   کو جب اس کے ماں باپ ٹوری اور کورے نے بتایا کہ وہ  کیا کر چکا تو اُس کا دل ٹوٹ گیا۔


29 سالہ  ٹوری  جب ایوریٹ کو چیک کرنے گئیں تو انہوں نے ٹینک کے ساتھ کرسی کو پڑے دیکھا جبکہ نیمو ٹینک سے غائب تھی۔ ٹوری نے کورے کو بلایا اور وہ نیمو کو ڈھونڈنے لگے۔
کافی دیر تلاش کرنے کے بعد اُن کی نطر  ایوریٹ کے ہاتھوں پر پڑی، جہاں مردہ نیمو موجود تھی۔ایوریٹ نے بتایا کہ اس نے تو مچھلی کو تھپتھپانے کے لیے ٹینک سے نکالا تھا، اسے احساس نہیں تھا کہ پانی سے باہر نیمو مر جائے گی۔

(جاری ہے)


امریکا میں بونائیر، جارجیا سے تعلق رکھنے والے ٹوری اور کورے نے چند ماہ پہلے اپنے بیٹے کے لیے گولڈ فش خریدی تھی۔ ایوریٹ اسے دیکھ کر کافی خوش ہوتا تھا لیکن اس کے مرنے پر کافی غمگین بھی ہے۔
ٹوری نے  سوشل میڈیا پر اپنی کہانی شیئر کی تو یہ فورا وائرل ہوگئی۔ بعض صارفین نے بے چارے ایوریٹ کے لیے نئی گولڈ فش خریدنے کی پیش کش بھی کی۔
خوش قسمتی سے ایوریٹ کے والدین نے اسے نئی گولڈ فش خریدنے کے لیے ایک گفٹ کارڈ دیا ہے۔ ایوریٹ نے وعدہ کیا ہے کہ وہ نئی مچھلی کو کبھی نہیں چھوئے گا۔

وقت اشاعت : 08/03/2019 - 23:49:53

متعلقہ عنوان :

Your Thoughts and Comments