بڑھتی ہوئی قوم پرستی سے لڑنے کا بہترین حل جمہوریت ہے،فرانسیسی صدر

آمرانہ سوچ کا جواب جمہوری آمریت نہیں بلکہ جمہوریت کی بالادستی ہے،یورپی پارلیمنٹ سے خطاب

بدھ اپریل 12:13

اسٹراسبرگ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 18 اپریل2018ء) فرانسیسی صدر ایمانوئل ماکروں نے زور دیا ہے کہ جنگ اور آمرانہ طرز کی حکومتوں کے اس دور میں یورپی یونین کے رکن ممالک کے شہریوں کو تحفط فراہم کرنے کے لیے اس بلاک میں اصلاحات درکار ہیں۔غیرملکی خبررساں ادارے کے مطابق یورپی یونین سے متعلق اپنے خیالات کا اظہار فرانسیسی شہر اسٹراسبرگ میں یورپی پارلیمان میں اپنی تقریر کے دوران کیا۔

اس موقع پر ماکروں نے کہا کہ بڑھتی ہوئی قوم پرستی سے لڑنے کا بہترین حل جمہوریت ہے۔

(جاری ہے)

انہوں نے کہاکہ آمرانہ سوچ کا جواب جمہوری آمریت نہیں بلکہ جمہوریت کی بالادستی ہے۔ماکروں نے کہا کہ برطانیہ کے بلاک سے اخراج کے تناظر میں یورپی یونین کو 2019ء میں ہونے والے پارلیمانی انتخابات کے لیے ایک جاندار مہم چلانا ہوگی۔ فرانسیسی صدر نے یورپی بلا ک کے پارلیمانی لیڈروں کو کہا کہ یورپ کی شناخت کے حوالے سے جمہوری اور تنقیدی بحث ہونی چاہیے۔

ماکروں نے مزید کہا کہ اب شہری یورپ کے حوالے سے ایک آسا ن منصوبہ چاہتے ہیں، جو ان کے خدشات اور تحفظات کا جواب دے، خاص طور پر ایک ایسے وقت میں جب امریکا جیسے اتحادی ممالک کثیر الجہتی تجارتی اور ماحولیاتی تبدیلیوں سے متعلق معاہدوں سے پیچھے ہٹ رہے ہیں۔

متعلقہ عنوان :