خواتین ،21مائوں سمیت 6500فلسطینی اسرائیلی جیلوں میں قید

افرادپر کوئی الزام نہیں،سات فلسطینی قانون ساز ارکان1اور19صحافی بھی اسرائیلی جیلوں میں زیر حراست

بدھ اپریل 15:18

رام اللہ(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 18 اپریل2018ء)اس وقت 6500 سے زیادہ فلسطینی اسرائیلی جیلوں میں سڑ رہے ہیں۔ ان میں سے بعض نے تو 30 برس سے زیادہ عرصہ قید میں گزار لیا ہے۔ گرفتار شدگان میں 350 سے زیادہ بچے بھی ہیں جن کو اپنے کم عمر ہونے کے لحاظ سے نامناسب حراست اور عدالتی کارروائی کا سامنا ہے۔

(جاری ہے)

عرب ٹی وی کے مطابق اسرائیلی جیلوں میں 62 خواتین قیدی ہیں جن میں 21 مائیں بھی ہیں۔

ان کے علاوہ فلسطینی قانون ساز کونسل کے 7 ارکان اور انتظامی طور پر حراست میں لیے گئے 500 ایسے افراد ہیں جن پر کوئی الزام نہیں اور انہیں اسرائیلی عدالتوں میں پیش نہیں کیا گیا۔اسرائیلی جیلوں میں 119 صحافی بھی قید و بند کی صعوبتیں برداشت کر رہے ہیں جن کو کئی الزامات اور مختلف نوعیت کی سزاؤں کے فیصلوں کا سامنا ہے۔