سندھ حکومت کا اسلام کوٹ کو پائیدار ترقی اہداف کے عین مطابق تعلقہ بنانے کا عزم

جمعرات مئی 19:07

اسلام آباد(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 03 مئی2018ء) حکومت ِ سندھ نے ضلع تھر پارکرکے تعلقہ اسلام کوٹ کو سندھ کا پہلا پائیدار ترقی اہداف ماڈل کے مطابق بنانے کے غیر معمولی عزم کا اعادہ کیا۔اس ضمن میں پلاننگ اور ڈولپمنٹ بورڈ حکومت سندھ کی جانب سے جاری کردہ نوٹیفکیشن کے مطابق کثیر شعباتی طریقہ کار اور پبلک پرائیویٹ شراکت داری کے ذریعے ایس ڈی جی کے اہداف کا تعین کیا جائے گا اور اسلام کوٹ میں لاگو کیے جائیں گے۔

اسلام کوٹ خطے میں کوئلہ کان کنی اور توانائی کے منصوبوں کی سرگرمیوں کا مرکزہے اور سندھ بھر میں پہلا جغرافیائی علاقہ ہوگا جہاں ایس ڈی جی کے منفرد ماڈل کو پبلک پرائیوٹ پارٹنرشپ کے ذریعے لاگو کیا جائے گا جس کے تحت علاقے میں تعلیم،، علاج معالجہ ، پینے کے صاف پانی کی فراہمی ، بھوک افلاس کے خاتمے، توانائی کی پیداوار، روزگار کے مواقع اور معاشی نمو کو ترجیح دی جائے گی۔

(جاری ہے)

پائیدار ترقی اہداف کے جدید ماڈل کو وزیر اعلیٰ سندھ مراد علی شاہ نے منظوری دی۔اسلام کوٹ تعلقہ ، ضلع تھر پارکرکا ذیلی ضلع ہے اور یہ ملک کے سب سے پسماندہ علاقوں میں سے ایک ہے۔ یہاں تمام انسانی ترقی کے اعداد و شمار انتہائی مایوس کن ہیں جیسے کہ خواندگی کی شرح خصوصاً خواتین میں ۔مقاصد کو حاصل کرنے کے لئے ایک دس رکنی کمیٹی کا قیام عمل میں لایا گیا ہے جو تمام سرگرمیوںکو انجام دے گی۔

نوٹیفکیشن کے مطابق کمیٹی کے چیئرمین ، پلاننگ اینڈ ڈولپمنٹ بورڈ کے چیئرمین ہونگے۔ باقی ارکان میں اسکول ایجوکیشن ڈپارٹمنٹ، ہیلتھ ڈپارٹمنٹ، پبلک ہیلتھ انجینئرنگ ڈپارٹمنٹ، انرجی ڈپارٹمنٹ، فنانس ڈپارٹمنٹ اور ایگریکلچر ڈپارٹمنٹ کے سیکریٹریز ، سندھ اینگرو کول مائننگ کمپنی کے چیف ایگزیکٹو آفیسر، تھر فائونڈیشن کے جنرل مینیجر اور ایس ڈی جیز سپورٹ یونٹ سندھ کے پروجیکٹ مینیجر شامل ہیں ۔

فورم کے ٹرمز آف ریفرنس کو جائزے اور منظوری کے لئے حتمی شکل دی جاچکی ہے جس میں ایس ڈی جی کو لاگو کرنے کا ایکشن پلان، مانیٹرنگ اور سُپر وائزنگ، پبلک پرائیوٹ پارٹنر شپ کے تحت جدت سے مزین تجاویز پیش کرنا، حکومت سندھ کا ایس ڈی جی کو تیز تر کرنے کے عزم کا اعادہ اور طریقہ کار،، تحقیق اور ممکنات کی اسٹیڈیز مکمل کرنا تاکہ ایس ڈی جی کو لاگو کرنے میں معاونت فراہم کی جاسکے اور ایس ڈی جی سے جڑے تمام متعلقہ محکمے، پرائیویٹ سیکٹر ، سول سوسائٹی اور اکادمی شامل ہیں۔

رابطہ کرنے پر اسٹیرنگ کمیٹی کے رکن جناب نصیرمیمن، جنرل مینیجر برائے کارپوریٹ سماجی ذمہ داری ، ایس ای سی ایم سی اور تھر فائونڈیشن نے کہاکہ حکومت سندھ اسلام کوٹ کو ایس ڈی جی کے مطابق تعلقہ بنانے کے لئے پُرعزم ہے اور اس کے لئے ٹھوس بنیادوں پر اقدامات لے رہی ہے۔انہوں نے مزید کہا تعلقہ اسلام کوٹ میں آنے والی سالوں میں سرمایہ کاری 5سے 8 ارب ڈالر متوقع ہے۔اس سرمایہ کاری سے اسلام کوٹ کی مقامی آبادی کو ترقی کے نئے مواقع میسر آئیں گے جس سے یہاں کی مقامی آبادی کے انسانی ترقی کے اعداد وشما ر کو اقوام متحدہ کے ڈولپمنٹ پروگرام کے مطابق وضع کردہ معیار کے مطابق لایا جاسکے گا۔