ایران امریکی انخلا کے باوجودمعاہدے پر کاربند رہے،سربراہ خارجہ امور یورپی یونین کی اپیل

جوہری معاہدہ برقرار رکھنا چاہتے ہیں،یہ معاہدہ عالمی طاقتوں کی 12 برسوں کی سفارت کاری کا نچوڑ،معاہدہ سبوتاژ نہیں کرنے دیا جائے گا، فیدیریکا موگیرینی

بدھ مئی 19:39

برلن(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 09 مئی2018ء) یورپی یونین کی خارجہ امور کی سربراہ فیدیریکا موگیرینی نے ایران سے اپیل کی ہے کہ وہ بھی امریکی انخلا کے باوجود اس معاہدے پر کاربند رہے،،یورپی یونین ایران کے ساتھ جوہری معاہدہ برقرار رکھنا چاہتی ہیں،عالمی طاقتوں کا تہران کے ساتھ یہ معاہدہ12 برسوں کی سفارت کاری کا نچوڑ ہے کسی ایک کو اسے ختم کرنے کی اجازت نہیں دی جا سکتی۔

غیر ملکی میڈیا کے مطابق صدر ٹرمپ کے ایران کے ساتھ عالمی جوہری معاہدے سے امریکی انخلا کے اعلان کے بعد یورپی یونین نے کہا ہے کہ وہ اس معاہدے پر کاربند رہنا چاہتی ہے۔ صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے کل منگل کو یکطرفہ اعلان کر دیا تھا کہ امریکا اس ڈیل سے نکل رہا ہے۔ یورپی یونین کی خارجہ امور کی سربراہ فیدیریکا موگیرینی نے ایران سے اپیل کی ہے کہ وہ بھی امریکی انخلا کے باوجود اس معاہدے پر کاربند رہے۔

(جاری ہے)

موگیرینی کا کہنا تھا کہ ایرانی جوہری پروگرام سے متعلق عالمی طاقتوں کا تہران کے ساتھ یہ معاہدہ بارہ برسوں کی سفارت کاری کا نچوڑ ہے۔ انہوں نے کہا کہ یہ معاہدہ سب کا ہے اور کسی ایک کو اسے ختم کرنے کی اجازت نہیں دی جا سکتی۔ موگیرینی نے بین الاقوامی برادری کے ساتھ مل کر اس معاہدے کو برقرار رکھنے کا عندیہ بھی دیا۔ جرمنی،، فرانس اور برطانیہ بھی اس معاہدے کو برقرار رکھنا چاہتے ہیں۔