بھارتی سپریم کورٹ نے سری دیوی کی موت کی تحقیقات سے متعلق درخواست مسترد کردی

ہم سری دیوی کی موت کی تحقیقات میں مداخلت نہیں کرسکتے ،ْ جسٹس دیپک مشرا

جمعہ مئی 16:30

نئی دہلی(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 11 مئی2018ء) بھارتی سپریم کورٹ نے بالی ووڈ کی لیجنڈری اداکارہ سری دیوی کی موت کی تحقیقات سے متعلق دائر کی گئی درخواست رد کردی۔۔بھارتی سپریم کورٹ میں سری دیوی کی موت سے متعلق تحقیقات کیلئے دائر کی گئی درخواست پر سماعت ہوئی، سماعت سپریم کورٹ کے جج جسٹس دیپک مشرا نے کی۔ جسٹس دیپک مشرا نے درخواست مسترد کرتے ہوئے ریمارکس دئیے کہ ہم سری دیوی کی موت کی تحقیقات میں مداخلت نہیں کرسکتے۔

تین ماہ قبل دبئی کے ایک ہوٹل میں باتھ ٹب میں ڈوبنے کے باعث ہلاک ہونے والی آنجہانی اداکارہ سری دیوی کی اچانک موت ان کے چاہنے والوں کیلئے معمہ بنی ہوئی ہے۔ یہی وجہ ہے کہ لوگ جاننا چاہتے ہیں کہ آخر سری دیوی کی موت کیسے ہوئی اسی سلسلے میں فلمساز سنیل سنگھ نے بھارتی سپریم کورٹ میں درخواست دائر کی تھی جسے عدالت نے ہونے والی سماعت میں مسترد کردیا ہے۔

(جاری ہے)

درخواست گزار کے وکیل وکاس سنگھ نے سری دیوی کی موت پر شکوک و شبہات کا اظہار کرتے ہوئے عدالت میں موقف اختیار کیا تھا کہ اداکارہ کے نام پر اومان میں 240 کروڑ کی انشورنس پالیسی تھی جو صرف اسی صورت میں گھر والوں کو مل سکتی تھی جب ان کی موت دبئی میں ہو۔یاد رہے کہ سنیل سنگھ نے اس سے قبل دہلی ہائی کورٹ میں بھی سری دیوی کی موت سے متعلق تحقیقات کیلئے درخواست دائر کی تھی جسے رد کردیا گیا تھا۔