ایس ای سی پی نے لمیٹڈ لائیبلیٹی پارٹنر شپ ریگولیشنز 2018 جاری کر دئے

پیر مئی 22:48

ایس ای سی پی نے لمیٹڈ لائیبلیٹی پارٹنر شپ ریگولیشنز 2018 جاری کر دئے
اسلام آباد (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 14 مئی2018ء) سکیورٹیز اینڈ ایکس چینج کمیشن آف پاکستان نے لمیٹڈ لائیبلٹی پارٹنر شپ ایکٹ 2017 کے تحت شراکتِ محدود ذمہ داری (لمیٹڈ لائیبلٹی پارٹنر شپ) ریگولیشنز 2018جاری کر دئے ہیں۔ لمیٹڈ لائیبلٹی پارٹنرشپ کا قانون چھوٹے اور محدود پیمانے پر کئے جانے والے کاروبار جو کہ زیادہ تر مختلف خدمات کی فراہمی سے متعلق ہوتے ہیں کو ریگولیٹ اور رجسٹر کرنے کے لئے ایک با قاعدہ مگر آسان ریگولیٹری فریم ورک کرتا ہے۔

یہ قانون سرمایہ کاروں کو روایتی کاروباری شراکت داری کی آسانی کے ساتھ ساتھ ایک کمپنی کے محدود ذمہ داری کی سہولت بھی فراہم کرتا ہے جس سے پیشہ ور ماہرین، نئے کاروباری شروع کرنے کے خواہشمند سرمایہ کار اور سمال اینڈ میڈیم انٹر پرائزیز فائدہ اٹھا سکتی ہیں۔

(جاری ہے)

کاروبار کی رجسٹریشن کا یہ قانونی سٹکچر دنیا کے بیشتر ملکوں میں موجود ہے۔ لمیٹڈ لائیبلٹی پارٹنرشپ کے ریگولیشنز میں اس قانون کے تحت کاروبار کی رجسٹریشن کے طریقہ کار،، شراکت داری کرنے والے افراد کی اہلیت، کمپنی کے اکاؤنٹ اور آڈٹ کی ضروریات اور تقاضوں کی تفصیلات فراہم کی گئیں ہیں۔

ایل ایل پی کے ریگولیشنز ایس ای سی پی کی ویب سائٹ پر فراہم کر دئے گئے ہیں۔ امید کی جاتی ہے کہ ایل ایل پی کے تحت کاروبار کی رجسٹریشن کی سہلوت معیشت کی کارپوریٹائزیشن میں معاون ہوگی۔