چھوٹے ،درمیانے درجے کی صنعتیں معیشت کی ریڑھ کی ہڈی ہیں ‘لاہور چیمبر آف کامرس

سٹیک ہولڈرز کی مشاورت سے تیار کی گئی ایک اچھی قابل عمل پالیسی ایس ایم ایز کو مزید استحکام بخش سکتی ہے

بدھ مئی 15:28

چھوٹے ،درمیانے درجے کی صنعتیں معیشت کی ریڑھ کی ہڈی ہیں ‘لاہور چیمبر ..
لاہور (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 16 مئی2018ء) چھوٹے اور درمیانے درجے کی صنعتیں معیشت کی ریڑھ کی ہڈی ہیں اور معاشی ترقی میں ان کا کردار بہت اہم ہے ، سٹیک ہولڈرز کی مشاورت سے تیار کی گئی ایک اچھی قابل عمل پالیسی ایس ایم ایز کو مزید استحکام بخش سکتی ہے۔ ان خیالات کا اظہار لاہور چیمبر کے سینئر نائب صدر خواجہ خاور رشید، نائب صدر ذیشان خلیل، سٹینڈنگ کمیٹی برائے ایس ایم ایز کے کنوینر رحمت اللہ جاوید،سٹیٹ بینک آف پاکستان کے قائم مقام چیف مینیجر افتخار عنصر بٹ سمیت دیگر ماہرین نے لاہور چیمبر میں سیمینار سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔

خواجہ خاور رشید نے کہا کہ دنیا بھر میں معاشی حوالے سے سمال اینڈ میڈیم انٹرپرائزز کا کردار وسعت اختیار کررہا ہے اور ان کی اہمیت بڑھتی چلی جارہی ہے، حکومت کو ایس ایم ایز کی ترقی کے لیے کاروباری برادری کی مشاورت سے حکمت عملی وضع کرنے کی ضرورت ہے کیونکہ یہ سیکٹر حقیقی معنوں میں انجن آف گروتھ ہے۔

(جاری ہے)

ذیشان خلیل نے کہا کہ ایس ایم ایز کو درپیش مسائل حل ہونے اور اس کی ترقی سے مینوفیکچرنگ سیکٹر بھی ترقی کرے گا جس کے انتہائی مثبت اثرات برآمدات پر مرتب ہونگے جنہیں بڑھانے کی اشد سے ضرورت ہے۔

رحمت اللہ جاوید نے ایس ایم ایز کو بجلی و گیس سمیت دیگر اشیاء سستے داموں فراہم کرنے کی ضرورت پر زور دیا۔ انہوں نے کہا کہ قرضوں کا حصول ایس ایم ایز کے لیے ایک بہت بڑا مسئلہ ہے ، حکومت چھوٹے اور درمیانے درجے کی صنعتوں کو آسان شرائط اور کم مارک اپ پر قرضے کی فراہمی یقینی بنائے تاکہ یہ ملک کی ترقی و خوشحالی میں اپنا کردار ادا کرسکیں۔ رحمت اللہ جاوید نے امید ظاہر کی کہ حکومت جلد ہی ایس ایم ایز کے لیے خصوصی پالیسی جاری کرے گی۔