ٹیکساس ہائی اسکول کاملزم ذہنی اٴْلجھنوں کا شکار تھا پولیس اوروکلاء میں بحث

تحقیق میں کئی متنازع پہلو سامنے آرہے ہیں،پولیس/دیمترس کی حرکت پر حیران،ہمیں بھی اتنا ہی غم ہے جتنا باقی لوگوں کو،خاندان

منگل مئی 12:57

ٹیکساس ہائی اسکول کاملزم ذہنی اٴْلجھنوں کا شکار تھا پولیس اوروکلاء ..
ٹیکساس سٹی (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 22 مئی2018ء) امریکی ریاست ٹیکساس کے ہائی اسکول میں فائرنگ کرکے پاکستانی طالبہ سبیکا سمیت دس افراد کی جان لینے وا لے 17 سالہ دیمترس کی ذہنی کیفیت پر پولیس اور وکلاء میں بحث چھڑ گئی۔غیر ملکی میڈیا کے مطابق دیمترس کے و کلاء نے دعویٰ کیا کہ ان کا موکل ذہنی کیفیت میں لگتا ہے، ضرور اسے پہلے دماغی صحت سے متعلق مسئلہ درپیش رہا ہو گا ۔

ادھر تفتیشی پولیس کا کہنا تھا کہ اس تحقیق میں کئی متنازع پہلو سامنے آرہے ہیں، دیمترس دس لوگوں کی جان لینے کے بعد خودکشی کرنا چاہتا تھا مگر ہمت نہیں کر پایا۔اس نے قتل کی واردات میں اپنے باپ کا اسلحہ استعمال کیا۔تفتیشی افسران کو اس کے فیس بک اکاونٹ سے اس کی ایک تصویر بھی ملی جس میں اس نے ٹی شرٹ پہن رکھی تھی جس پر لکھا تھا بورن ٹوکِل(میں مارنے کے لئے پیدا ہوا ہوں)۔

(جاری ہے)

رپورٹ کے مطابق دیمترس کے خاندان کی جانب سے ایک بیان میں کہا گیا کہ ہم دیمترس کی اس حرکت پر حیران ہیں اور ہمیں اس واقعے کا اتنا ہی غم ہے جتنا باقی لوگوں کو ۔ہم حکام کے ساتھ ہر طرح کا تعاون کرنے کو تیار ہیں۔دوسری جانب نائب گورنر ٹیکساس ڈین پیٹرک نے کہاکہ ہتھیار نہیں، خاندانی مسائل، مذہب سے لا تعلقی اور پرتشدد وڈیو گیمز اسکولوں میں فائرنگ کے واقعات کا سبب بنتے ہیں۔