گوئٹے مالا کے سابق آرمی چیف کو زیادتی اور اغوا کے الزام میں 58 سال قید

1981ء میں خانہ جنگی کے دوران ریپ، تشدد اور اغواء کے الزام میں دوسابق افسروں کو بھی 58سال قید کی سزا

جمعرات مئی 12:14

گوئٹے مالا کے سابق آرمی چیف کو زیادتی اور اغوا کے الزام میں 58 سال قید
گوئٹے مالاسٹی(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 24 مئی2018ء) گوئٹے مالا میں سابق آرمی چیف سمیت تین افسران کو زیادتی اور اغوا کے الزام میں 58 سال قید کی سزا سنا دی گئی ۔عرب ٹی وی کے مطابق گوئٹے مالا میں 1981ء میں خانہ جنگی کے دوران ریپ، تشدد اور اغواء کے الزام میں سابق آرمی چیف بینی ڈکٹولوکاس اور دیگر سابق 2 افسروں کو 58 برس قید کا حکم سنایا دیاگیا جبکہ ایک سابق فوجی افسر کو 33 برس قید ہوئی۔

(جاری ہے)

ان افسران کو جنوری 2016ء میں گرفتار کیا گیا تھا سابق آرمی چیف لوکاس فوجی ہسپتال میں داخل ہیں اور عدالت کافیصلہ ویڈیو کانفرنس کے ذریعے سنا۔بینی ڈکٹولوکاس پر 1981 کی خانہ جنگی کے دوران خاتون سے اجتماعی زیادتی اور اسکے گیارہ سالہ بھائی کو اغوا کرنے کا الزام تھا جو تاحال لاپتہ ہے ۔۔عدالت میں فیصلہ سامنے آنے کے بعد متاثرہ خاتون آبدیدہ ہوگئیں اور انسانی حقوق کے کارکنوں نے ایک دوسرے کو مبارکباد دی ۔اعدادوشمار کے مطابق طویل عرصے جاری رہنیوالی خانہ جنگی میں دولاکھ کے قریب افراد ہلاک یا لاپتہ ہوگئے تھے۔

متعلقہ عنوان :