کرکٹ میں کرپشن کا ایک اور اسکینڈل،

سری لنکا میں ’وکٹ فکسنگ‘ کی سازش پکڑی گئی گال اسٹیڈیم کے گراؤنڈ اسٹاف نے سری لنکا اور انگلینڈ کے درمیان رواں برس 6 نومبر کو ہونے والے میچ کیلئے وکٹ فکسنگ کی یقین دہانی کروائی ،ْ تحقیقاتی رپورٹ رپورٹ کے مکمل طور پر منظر عام پر آنے کے بعد معاملے کی تحقیقات کی جائے گی ،ْ آئی سی سی

ہفتہ مئی 12:45

کولمبو /لندن (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 26 مئی2018ء) کرکٹ میں کرپشن کا ایک اور اسکینڈل بے نقاب ہوگیا ،ْ سری لنکا میں ’وکٹ فکسنگ‘ کی سازش پکڑی گئی۔دی ٹیلی گراف نے اپنی تحقیقاتی رپورٹ میں انکشاف کیا ہے کہ گال اسٹیڈیم کے گراؤنڈ اسٹاف نے سری لنکا اور انگلینڈ کے درمیان رواں برس 6 نومبر کو ہونے والے میچ کے لیے وکٹ فکسنگ کی یقین دہانی کروائی۔

رپورٹ کے مطابق اس سازش میں سابق بھارتی فرسٹ کلاس کرکٹر رابن مورس اور گال اسٹیڈیم کا اسسٹنٹ مینیجر تھرانگا اندیکا شامل ہیں۔واضح رہے کہ بھارتی فرسٹ کلاس کرکٹر رابن مورس ممبئی کی جانب سیکرکٹ کھیل چکے ہیں۔اس حوالے سے ایک انڈر کور (خفیہ) رپورٹر، بزنس مین کے روپ میں گال اسٹیڈیم کے اسٹاف سے ملا اور خفیہ طور پر اس بات چیت کی ویڈیو بھی ریکارڈ کرلی۔

(جاری ہے)

مذکورہ رپورٹر نے پوچھا کہ کیا ٹیسٹ میچ 4 دن میں ختم ہوجائیگا جس پر وکٹ فکسر تھرانگا اندیکا نے رپورٹر کو جواب دیا کہ چار دن کیا ،ْڈھائی دن میں ہی ختم کردیں گے۔مذکورہ وکٹ فکسر نے بھارت اور سری لنکا کے درمیان گال ٹیسٹ کی وکٹ کو بھی’فکس‘ کرنیکا اعتراف کیا ،ْاس میچ میں بھارت نے 6 سو سے زائد رنز بنائے تھے۔ عرب ٹی وی چینل الجزیرہ پر اس حوالے سے ڈاکیومینٹری کل بروز اتوار (27 مئی) کو نشر کی جائے گی۔دوسری جانب انٹرنیشنل کرکٹ کونسل (آئی سی سی) کا کہنا ہے کہ رپورٹ کے مکمل طور پر منظر عام پر آنے کے بعد معاملے کی تحقیقات کی جائے گی۔