سورج مکھی کے کاشتکار احتیاط سے برداشت کاعمل مکمل کریں، ماہرین زراعت

بدھ مئی 18:56

فیصل آباد۔30 مئی(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 30 مئی2018ء) ماہرین زراعت نے بتایا ہے کہ سورج مکھی 120سے 130دنوں میں تیار ہونے والی ایک حساس فصل ہے لہٰذا کاشتکار محنت و احتیاط سے برداشت کاعمل مکمل کریں۔ایک ملاقات کے دوران انہوںنے بتایاکہ اس عمل میں کسی قسم کی کوتاہی پیداوار کو بری طرح متاثر کر سکتی ہے۔انہوں نے بتایا کہ جب سورج مکھی کے پھول کی پشت کا رنگ سب سے سنہری ہوجائے پھولوں کی پتیاں جلد خشک ہوجائیں ، سبز پتیاں بھوری ہو جائیں تو فصل کے پھولوں کو درانتی سے کاٹ لیں اور دو تین دن تک زمین سے ایک فٹ اونچے بنائے گئے چبوتروں پر پھیلا دیں جس کے بعد تھریشر سے گہائی کریں۔

انہوںنے کہاکہ اگر فصل تھوڑی ہوتو پھولوں کی کٹائی کے بعد ان کو خشک کرکے ڈنڈوں سے کوٹ کر دانے علیحدہ کرلیںاورانہیں دھوپ میں اچھی طرح خشک کرلیں ۔

(جاری ہے)

انہوںنے کہاکہ زیادہ رقبوں پر کاشتہ فصل کی برداشت کے لیے کمبائن ہارویسٹر کااستعمال کیا جائے نیز اگر فصل قبل ازوقت برداشت کرلیں تو دانے پچک جاتے ہیں جن کے وزن میں کمی آجاتی اور کوالٹی بری طرح متاثر ہوتی ہے۔

انہوںنے کہاکہ اسی طرح اگر فصل پکنے کے بعد بروقت برداشت نہ کی جائے تو فصل کے گرنے اور پرندوں کے کھانے کی وجہ سے نقصان کا احتمال ہوتا ہے۔انہوںنے کہاکہ دیر تک کھڑی فصل میں بارش ہونے کی صورت میں سورج مکھی کے بیجوں کو پھپھوندی لگنے کا خطرہ بڑھ جاتا ہے۔انہوںنے سفارش کی کہ کاشتکار بہترین قیمت حاصل کرنے یا سٹوروں میں ذخیرہ کرنے کیلئے اس میں نمی کی مقدار آٹھ فیصد اور کچرہ دو فیصد سے زیادہ نہ رہنے دیں ۔انہوںنے کہاکہ جب دانہ دبانے سے ٹوٹنے لگے تواس وقت اس میں نمی کی مقدار آٹھ فیصد کے قریب ہوتی ہے۔انہوںنے کاشتکاروں کو مزید ہدایت کی کہ بیج کو اچھی طرح صاف کرکے نئے باردانہ میں ڈال کر فروخت یا ذخیرہ کیاجائے تاکہ اسے کسی قسم کانقصان پہنچنے کاخدشہ نہ رہے ۔

متعلقہ عنوان :