دُبئی:متحدہ عرب امارت میں ملازمین کے لیے خوش آئند پالیسی کا اعلان کر دیا گیا

بینک گارنٹی کی جگہ انشورنس سسٹم نے لے لی

Muhammad Irfan محمد عرفان جمعرات جون 12:16

دُبئی:متحدہ عرب امارت میں ملازمین کے لیے خوش آئند پالیسی کا اعلان کر ..
دُبئی (اُردو پوائنٹ اخبار تازہ ترین۔12جُون 2018ء) گزشتہ روز کابینہ کا اجلاس منعقد ہوا جس کی صدارت عزت دُبئی کے فرماں روا عزت مآب شیخ محمد بن رشید المکتوم نے کی جو کہ متحدہ عرب امارات کے وزیر اعظم اور نائب صدر بھی ہیں۔ اس اجلاس میں غیر ملکی ملازمین کی ویزہ پالیسی اور اُن کو سہولتوں دینے کے حوالے سے اہم فیصلے لیے گئے۔ تفصیلات کے مطابق کابینہ نے غیر ملکی ورکرز کے لیے انشورنس کی پالیسی متعارف کرائی ہے۔

اس کے علاوہ ویزہ سہولتوں کے حوالی سے بھی قانونی پیکج کا اعلان کیا گیا ہے۔ پہلے نجی کمپنیوں کو فی ورکر کے حساب سے تین سو اماراتی درہم جمع کروانے ہوتے تھے جس کی جگہ اب انشورنس کی رقم نے لے لی ہے جس کے تحت اب ہر ورکر کے لیے سالانہ 60 اماراتی درہم جمع کروانا ہوں گے۔

(جاری ہے)

اس نئی سکیم کے تحت نجی شعبے میں ورکرز کے حقوق کا تحفظ ممکن ہو سکے گا اور اُن کے ایمپلائرز پر سے بوجھ کم ہو جائے گا۔

اس سے تجارتی شعبوں کو تقریباً 14 بلین اماراتی درہم کی حصولی میں مدد مِلے گی۔ اس کے علاوہ اس نظام سے متحدہ عرب امارات میں کاروبار کرنے میں سہولت پیدا ہو گی‘ جس کے باعث معیشت میں ترقی اور اضافہ ہو گا۔ اس نئے نظام سے ورکرز کو دی جانے والی سہولتوں میں اضافہ ہو گا اور اُن کے حقوق کا تحفظ ممکن ہو سکے گا۔ نئے نظام کے تحت متعارف کرائی گئی انشورنس پالیسی کے ہر ورکر کی سالانہ انشورنس فیس60 اماراتی درہم مقرر کی گئی ہے۔

یہ انشورنس ورکر کو ملازمت کی مُدت کے بعد حاصل ہونے والے بینفیٹس‘ تعطیلات الاؤنس‘ اوور ٹائم الاؤنس‘ غیر ادا شدہ تنخواہیں‘ ورکرز ریٹرن ٹکٹ‘ کام کے دوران زخمی ہونے کے معاملات کا احاطہ کرتی ہے جس کے تحت ہر ورکر کو 20 ہزار اماراتی درہم کی انشورنس دی جائے گی۔ کابینہ نے امارات میں وِزٹ کی غرض سے آنے والوں‘ یہاں مقیم افراد‘ اور ایسے لوگ اور فیملیاں جو ویزہ کی مُدت سے زیادہ قیام کرنے کے باعث مشکلات کا شکار ہو جاتے ہیں‘ اُن کے لیے بھی ویزہ کے ضمن میں بہت سی آسانیاں دینے کا فیصلہ کیا ہے۔

کابینہ نے ایک نئے قانونی پیکج کی منظوری دی ہے جس میں امارات میں مقیم یونیورسٹی کے طالب علموں کے لیے ویزہ میں دو سال کی توسیع بھی شامل ہے۔ اس کے علاوہ ایک اور فیصلے کے تحت ٹرانزٹ مسافروں پر سے پہلے 48 گھنٹوں کے دوران قیام کی مُدت پر کوئی انٹری فیس لاگو نہیں ہو گی۔ ٹرانزٹ ویزہ کی مُدت میں صرف پچاس اماراتی درہم کے عوض 96گھنٹوں کی توسیع کی جا سکتی ہے۔ یہ ٹرانزٹ ویزہ متحدہ عرب امارات کے تمام انٹرنیشنل ایئرپورٹس پر موجود ایکسپریس کاؤنٹرز سے بآسانی حاصل کیا جا سکتا ہے۔