مائو باغیوں نے فائرنگ کر کے رکن اسمبلی کیدار سرویسوارا اور سابق رکن اسمبلی سیوری سوما کو قتل کردیا

وزیراعلیٰ چندر بابو نیدو نے اراکین اسمبلی کے قتل کی مذمت کرتے ہوئے قاتلوں کی گرفتاری کا حکم دیدیا

اتوار ستمبر 19:00

نئی دہلی(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 23 ستمبر2018ء) بھارتی ریاست آندھرا پردیش میں مائو باغیوں نے فائرنگ کر کے رکن اسمبلی کیدار سرویسوارا اور سابق رکن اسمبلی سیوری سوما کو قتل کردیا ہے۔بھارتی میڈیا کے مطابق تیلگو دیسام پارٹی کے دو رہنمائوں کو مائو باغیوں نے آندھرا پردیش کے ضلع وشاکھا پٹنم میں گولیاں مار کر قتل کردیا ہے۔ دونوں رہنما علاقے میں کان کنی کے ایک معاہدے پر مائو باغیوں سے گفت و شنید کرنے گئے تھے کہ 40 سے 50 مائو باغیوں نے دھاوا بول دیا۔

پولیس کے مطابق رکن اسمبلی کو جن علاقوں کے دورے پر جانا تھا وہاں سیکیورٹی انتظامات مکمل تھے لیکن وہ آخری وقت میں اپنا دورہ تبدیل کرتے ہوئے گائوں دمبری گودا چلے گئے جو مائو باغیوں کے زیر تسلط ہے۔ حملہ آوروں میں خواتین بھی شامل تھیں۔

(جاری ہے)

اراکین اسمبلی کے قتل کا واقعہ اس وقت پیش آیا ہے جب مائو باغی اپنی جماعت کا یوم تاسیس منا رہے ہیں۔

اس بار یوم تاسیس پورے ہفتے منایا جائے گا جس کی اختتامی تقریب 27 ستمبر کو ہوگی۔ وزیراعلیٰ چندر بابو نیدو نے اراکین اسمبلی کے قتل کی مذمت کرتے ہوئے قاتلوں کی گرفتاری کا حکم دیا ہے۔مقتول رکن اسمبلی کیدار سرویسوارا رائو 2016 میں آراکو سے کانگریس کے ٹکٹ پر رکن اسمبلی منتخب ہوئے تھے۔ بعد ازاں تیلگو دیسام پارٹی میں شمولیت اختیار کی۔ حکمراں جماعت نے انہیں سرکاری نمائندہ مقرر کردیا تھا جب کہ قتل ہونے والے دوسرے رہنما سیوری سوما بھی تیلگو پارٹی کے سابق رکن اسمبلی تھے۔

واضح رہے کہ یہ علاقہ قدرتی معدنیات بالخصوص المونیم سے بھرپور دھاتی پتھر باکسائیٹ کے لیے شہرت رکھتا ہے۔ مقتول رکن اسمبلی پر باکسائٹ کی غیر قانونی کان کنی کے کئی مقدمات درج ہیں جب کہ ماو? تحریک ان معدنیات کو حق سمجھتے ہوئے اپنا تسلط چاہتی ہے۔