40 ہزار روپے مالیت کے بانڈز میں سرمایہ کاری کرنے والوں نی 31 اگست تک 152 ارب روپے مالیت کے بانڈز واپس کئے ہیں، حکام نیشنل سیونگ

جمعہ ستمبر 17:10

40 ہزار روپے مالیت کے بانڈز میں سرمایہ کاری کرنے والوں نی 31 اگست تک 152 ..
اسلام آباد ۔ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - اے پی پی۔ 20 ستمبر2019ء) حکومت کی جانب سے 40 ہزارروپے مالیت کے بانڈز کو ختم کرنے کے بعد 31 اگست 2019ء تک 40 ہزار روپے مالیت کے بانڈز میں سرمایہ کاری کرنے والوں نے 152 ارب روپے مالیت کے بانڈز واپس کئے ہیں۔ ڈائریکٹوریٹ آف نیشنل سونگز (سی ڈی این ایس)کے حکام نے ’’اے پی پی‘‘ کو بتایا کہ ان کے ادارے کو توقع ہے کہ ستمبرکے اختتام تک اس بانڈ میں سرمایہ کاری کرنے والے 194 ارب روپے مالیت کے بانڈز واپس کریں گے۔

جولائی 2019ء اور اگست 2019ء میں ان بانڈز میں سرمایہ کاری کرنے والوں نے بالترتیب 40 اور112 ارب روپے مالیت کے بانڈز واپس کئے۔ سٹیٹ بنک نے رواں سال 24 جون سے تمام کمرشل بنکوں کو 40 ہزار روپے مالیت کے بانڈز فروخت بند کرنے کا سرکلر جاری کیاتھا، ان بانڈز کو آئندہ سال 31 مارچ تک کیش یا واپس لینے کی مہلت دی گئی ہے۔

(جاری ہے)

ایک سوال پر انہوں نے بتایا کہ سی ڈی این ایس نے ماہ ستمبر کیلئے مختلف سکیموں پر منافع کی شرح میں کسی قسم کے ردوبدل نہ کرنے کا فیصلہ کیاہے۔

انہوں نے بتایا کہ چند ماہ قبل مختلف سرٹیفیکٹس اورسکیموں پر منافع کی شرح بڑھا دی گئی تھی تاکہ شہریوں کو قومی بچت کی طرف راغب کیا جاسکے۔ ایک سوال پر انہوں نے کہاکہ جاری مالی سال کیلئے قومی بچتوں کے ہدف میں 350 ارب روپے اضافہ کا اضافہ کیا گیاہے ، گزشتہ مالی سال میں یہ ہدف 324 ارب روپے تھا۔جاری مالی سال کیلئے مجموعی ہدف 1570 ارب روپے مقرر کیا گیاہے۔ 30 جون 2019 تک سی ڈی این ایس نے 410 ارب روپے کی بچتیں حاصل کیں جبکہ ہدف 324 ارب روپے تھا۔

متعلقہ عنوان :