سال 2019ء قومی ٹی ٹونٹی ٹیم کیلئے بدترین ثابت ہوا

قومی ٹیم 9میں سے صرف ایک میچ جیت پائی،مسلسل7میچز سے فتح سے محروم

جمعہ نومبر 23:01

لاہور(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - آن لائن۔ 08 نومبر2019ء) پرتھ میں آسٹریلیا کے ہاتھوں 10 وکٹوں کی شکست کے ساتھ 2019 ئ پاکستانی ٹی ٹونٹی ٹیم کیلئے ڈروانے خواب کے ساتھ اختتام پزیر ہوا۔ورلڈ رینکنگ میں نمبر ون پوزیشن پر موجود پاکستانی ٹیم 2019ئ میں ایسوسی ایٹ ٹیم کی مانند کھیلتی نظر آئی۔پرتھ میں 10 وکٹ کی شکست کے ساتھ پاکستان کرکٹ ٹیم نے مسلسل فتوحات سے محرومی کے 7 میچز مکمل کر لیے جو پاکستان ٹیم کا ٹی ٹونٹی میں جیت کیلئے سب سے طویل انتظار بن گیا ،پاکستانی ٹیم نے جنوبی افریقا کیخلاف سیریز کا آخری میچ جیتا تھا جس کے بعد اسے انگلینڈ سے واحد ٹی ٹونٹی میں شکست ہوئی، پھر سری لنکاکی بی ٹیم سے ہوم گرائونڈپر 3 میچز میں وائٹ واش ہوئے اور اسکے بعد آسٹریلیا سے پہلا میچ بارش کی نذر ہونے کے بعداگلے دونوں میچز میں اسے شکست کا سامنا کرنا پڑا۔

(جاری ہے)

یہ 2010 ئ کے بعد پاکستان ٹیم کا فتوحات سے محرومی کا سب سے لمبا انتظار ہے، 2010ئ میں پاکستان ٹیم مسلسل 6 میچز فتوحات سے محروم رہی تھی۔پاکستان نے سال کا آغاز اور اختتام نمبر ون ٹیم کی حیثیت سے کیا لیکن تلخ حقیقت یہ ہے کہ گرین شرٹس پورے سال میں محض ایک ٹی ٹونٹی میچ جیت پائے۔2019 ئ میں پاکستان نے دس ٹی ٹونٹی میچز کھیلے جن میں سے 8 میں اسے شکست ہوئی، ایک میچ بے نتیجہ رہا جبکہ صرف ایک میچ میں ہی اسے کامیابی حاصل ہوئی۔ یہ بات بھی قابل ذکر ہے کہ 2019ئ میں پاکستانی ٹیم تین مختلف کپتانوں شعیب ملک، سرفراز احمد اور بابر اعظم کی قیادت میں میدان میں اتری لیکن کوئی بھی ٹیم کو سیریز کی کامیابی نہ دلواسکا۔