ایران کو بہت بڑا دھچکا، سب سے قریبی دوست ملک نے ساتھ چھوڑ کر سعودی عرب سے ہاتھ ملا لیا

منگل اپریل 12:29

تہران(اُردو پوائنٹ اخبار آن لائن۔ منگل اپریل ء)ایران میں یٴْوتھ انڈسٹری اینڈ کامرس اتھارٹی کے سربراہ رضا امیدوار تجریشی نے کہاہے کہ ایران نے عراقی منڈی سے ہاتھ دھونا شروع کر دیے ہیں جو کہ سعودی عرب کے مفاد میں ہے۔ عراقی حکام سامان سے لدے ایرانی ٹرکوں کو داخل ہونے کی اجازت نہیں دے رہے ہیں۔ایرانی میڈیا کے مطابق تجریشی نے اپنے بیان میں کہا کہ تہران عراقی دارالحکومت بغداد میں اپنا اقتصادی مقام کھو رہا ہے اور اس کی جگہ سعودی عرب نے لے لی ہے۔

(جاری ہے)

انہوں نے عراق پر الزام عائد کیا کہ وہ ایران کے ساتھ اپنے تجارتی تعلقات میں شفافیت کا مظاہرہ نہیں کر رہا ہے۔ تجریشی نے عراق میں عسکری اخراجات کو بھی تنقید کا نشانہ بنایا جب کہ عراق کا اقتصادی نفع سعودی عرب کے حصّے میں جا رہا ہے۔تجریشی کے مطابق سعودی عرب اور عراق کے درمیان کسٹم ڈیوٹی میں کمی سے متعلق معاہدے کے نتیجے میں ایرانی کمپنیاں عراق کی منڈی سے محروم ہو گئیں۔ تجریشی نے بتایا کہ اس وقت عراق کی سیمنٹ کی ضرورت کو سعودی عرب پوری کر رہا ہے۔ اس سے پہلے یہ ضرورت ایران پوری کر رہا تھا تاہم کسٹم ڈیوٹی میں اضافے کے باعث یہ سلسلہ رک گیا۔

متعلقہ عنوان :

Your Thoughts and Comments