Ami

”امی“

”امی“۔ جارج نے رقت آمیز لہجے میں ساس سے کہا۔ ”پرسوں دوپہر کے وقت میں نے اپنی بیوی کو بذریعہ تارمطلع کیا تھا کہ میں آ رہاں ہوں لیکن آج شام جب یہاں پہنچا تو اسے ایک پڑوسی کے ساتھ پیار و محبت کی باتیں کرتے ہوئے پایا“ ساس ایک منٹ کے لئے خاموش‘ دم بخود بیٹھی رہی۔ پھر سر اٹھا کر سرد مہری کے ساتھ داماد کو مخاطب کرتے ہوئے بولی۔ ”تارکا محکمہ روز بروز بدسے بدتر ہوتا جا رہا ہے… ہو سکتا ہے تمہارا ارسال کردہ تار میری بچی تک نہ پہنچا ہو؟“۔

Your Thoughts and Comments