Dehati - Joke No. 666

دیہاتی - لطیفہ نمبر 666

ایک دیہاتی پہلی بار بس میں سوار ہوا۔ بس جب منزل کے قریب پہنچی تو ایک درخت سے جا ٹکرائی۔ دیہاتی آگے بیٹھا تھا‘ اس لئے اسے زیادہ چوٹیں آئیں وہ ہمت کر کے کھڑا ہوا اور ماتھے سے خون پونجھتے ہوئے ڈرائیور سے کہنے لگا:”کیوں بھائی! جہاں درخت نہیں ہوتے وہاں آپ کیسے بس روکتے ہیں؟“۔

مزید لطیفے

محنت ضائع

Mehnat Zaya

ایک شخص

Aik shakhs

ایک سردار جی

Aik sardar ji

ڈھکا چھپا

Dhaka chupa

ماں بیٹے سے

maa bete se

سیاستدان

siyasatdan

ماسٹر صاحب

Master sahab

استاد شاگرد سے

Ustad Shagird se

ایک صاحب

Aik Sahib

طالب علم

Talib e ilm

بجلی

bijli

ایک شخص

Aik Shakhs

Your Thoughts and Comments