Phateechar Car - Joke No. 1535

پھٹیچر کار - لطیفہ نمبر 1535

ایک دوپہر کو ایک پرانی پھٹیچر کارنئی دہلی کے ایک ریستوران کے سامنے آکر رکی۔ اس زنگ آلود کار کی چھت کا کپڑا تار تار تھا اور انجن سے دھوئیں کے بادل اٹھ رہے ۔ کار چلانے والا اتر کر قریب کھڑے ہوئے ایک آدمی سے کہنے لگا۔ بھائی ذرا کار کا دھیان رکھنا۔ میں ابھی ٹیلیفون کر کے واپس آیا۔ اس آدمی نے حامی بھرلی جب کار چلانے والا ٹیلیفون کر کے واپس آیا تو اس آدمی نے دس روپے طلب کیے۔ کار چلانے والے نے حیران ہو کر کہا۔ دس روپے یہ تو سراسر زیادتی ہے۔ میں نے تو دس منٹ بھی نہیں لگائے۔ اس آدمی نے جواب دیا۔ جناب میں وقت کی بات نہیں کر رہا ہوں۔ میں اس وقت خفت کا معاوضہ طلب کر رہا ہوں۔ جو مجھے اس کار کے پاس کھڑے رہنے سے ہوئی۔ سب لوگ یہی سمجھ رہے تھے کہ یہ کاری میری ہے۔

مزید لطیفے

بوڑھی عورت

Borhi aurat

چار روز

Char roz

صاحب ڈاکٹر کے پاس گئے

sahib dr ke paas gaye

ہوٹل

Hotel

مالک نوکر سے

malik nokar se

ایک بچہ رو رہا تھا

Aik Bacha Ro Raha Tha

امتحان ہال

imtihaan hall

کتے کی عزت

Kutte Ki izzat

قائداعظم

Quaid e Azam

شرم کسے آئے

sharam kaise aaye

شیدائی

shedai

پارٹی

Party

Your Thoughts and Comments