مارچ سے پہلے سینیٹ کوختم کرانیکی سازش میں ناکامی کے بعد اپنے چیئرمین کے ذریعے قبضہ کرانیکی کوششوں کی بھرپور مزاحمت کرینگے ‘ پرویز رشید

اگر پیپلز پارٹی کوئٹہ والوں ،عمران خان کے گند کا حصہ بنے گی تو (ن) لیگ آج اپنے امیدوارکا اعلان کر دیگی،اکثریت بھی ثابت کرینگے

ہفتہ مارچ 22:34

مارچ سے پہلے سینیٹ کوختم کرانیکی سازش میں ناکامی کے بعد اپنے چیئرمین ..
لاہور(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 10 مارچ2018ء) پاکستان مسلم لیگ (ن) کے مرکزی رہنما سینیٹر پرویز رشید نے کہا ہے کہ مارچ سے پہلے سینیٹ کو ختم کرانے کی سازش میں ناکام ہونے والوں کی جانب سے اپنے چیئرمین کے ذریعے سینیٹ پر قبضہ کرانے کی کوششوں کی (ن) لیگ بھرپور مزاحمت کرے گی ،اگر پیپلز پارٹی کوئٹہ والوں اور عمران خان کے گند کا حصہ بنے گی تو (ن) لیگ آج اپنے امیدوارکا اعلان کر دے گی اور ہم اکثریت بھی ثابت کریں گے۔

نجی ٹی وی سے گفتگو کرتے ہوئے پرویز رشید نے کہا کہ یہ کہانی سمجھنے کی ضرورت ہے کہ پہلے بلوچستان میں (ن) لیگ کی حکومت کو توڑا گیا اور پھر سینیٹ کی چھ نشستیں ہائی جیک کی گئیں ۔ یہ نشستیں پہلے کراچی پہنچیں اور قدموں میں ڈالی گئیں ، پھر بنی گالہ سے ایک صاحب چلے اور انہوںنے اپنی نشستیں کوئٹہ والوں کے قدموں پر نچھاور کیں جو پھر کراچی والوں کے قدموںمیں پہنچیں۔

(جاری ہے)

سب نے سنا اس کھیل میں بالواسطہ بے تحاشہ پیسہ استعمال ہوا ۔ ہم نے اس گند کو اسلام آباد پہنچنے سے روکنے کیلئے اور سیاست کی عزت و احترام کو قائم رکھنے کیلئے قربانی دی اور باوجود اس کہ ہمارے پاس آج بھی اکثریت ہے ہم نے چیئرمین کے لئے پیپلز پارٹی کے اس شخص کا نام دیا جو تین سال پہلے متفقہ منتخب کیا گیا تھا۔اگر یہ گند نہ رکا تو ہمارے پاس اکثریت ہے اور ہم اسے گن کر بیان کر سکتے ہیں ۔

پرویز رشید نے کہا کہ ہم ابھی بھی منتظر ہیں کہ اچھی دانش کو سامنے آنا چاہیے اور سیاست کے وقار کو بر قرا ررہنا چاہیے اور ہارس ٹریڈنگ کا راستہ روکنا چاہیے ۔ کچھ لوگ جو مارچ سے پہلے سینیٹ کو ختم کرانا چاہتے تھے اور کامیاب نہیں ہو سکے اور اگر اب وہ اپنے چیئرمین کے ذریعے سینیٹ پر قبضہ کرانا چاہتے ہیں تو میری جماعت اس کی مزاحمت کرے گی اور اپنی حکمت عملی سب کے سامنے بیان کر ے گی ۔ہم نہیں چاہتے کہ جو گند کوئٹہ سے شروع ہوا اور پھر کراچی میں خوب کارنامہ دکھایا گیا وہ اسلام آباد تک پہنچے ۔ پیپلزپارٹی اگر اس گند کا حصہ بنے گی جو عمران خان اور کوئٹہ والے مل کر کر رہے ہیں تو ہم اپنے امیدوار کا اعلان کردیں گے اور اکثریت بھی ثابت کریں گے ۔