ہمارے کرپٹ ججز کو پاکستان میں ٹریننگ کے لیے بھیجنا چاہئیے

پاکستانیو! کیا آپ ہمارے 22 کرپٹ ججز کے بدلے ہمیں اپنے 5 ججز دے سکتے ہیں۔ بھارتی صحافی کا ٹویٹ سوشل میڈیا پر وائرل

Sumaira Faqir Hussain سمیرا فقیرحسین پیر اپریل 12:31

ہمارے کرپٹ ججز کو پاکستان میں ٹریننگ کے لیے بھیجنا چاہئیے
اسلام آباد (اُردو پوائنٹ تازہ ترین اخبار۔ 16 اپریل 2018ء) : پانامہ کیس میں نواز شریف کی نا اہلی اور اس کے بعد یکے بعد دیگرے کئی کیسز کے میرٹ کی بنیاد پر فیصلوں نے پاکستان کی عدلیہ کا پوری دنیا میں ڈنکا بجوا دیا، پاکستانی عدلیہ کی تعریف اور ان کی کارکردگی کی گونج پڑوسی ملک بھارت میں بھی سنی گئی۔ سوشل میڈیا پر حال ہی میں بھارتی صحافی نے پاکستان کی عدلیہ سے متعلق کچھ ٹویٹس کیے جنہوں نے سوشل میڈیا پر دھوم مچا دی ۔

مائیکروبلاگنگ ویب سائٹ ٹویٹر پر اپنے پیغام میں بھارتی صحافی مدھوشن ٹھاکر نے نواز شریف کی تاحیات نااہلی کے سپریم کورٹ کے فیصلے پر رد عمل دیتے ہوئے کہا کہ ہمارے کرپٹ ججز کو پاکستان میں ٹریننگ حاصل کرنے کے لیے بھیجنا چاہئیے، پاکستانی سپریم کورٹ نے اپنے تاریخی فیصلے میں سیکشن62 ون ایف کے تحت نوازشریف کو تاحیات نا اہل قرار دے دیا ہے۔

(جاری ہے)

دوسری ٹویٹ میں انہوں نے پاکستانیوں کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ پیارے پاکستانیو! کیا میں آپ کو ایک پیشکش کر سکتا ہوں؟ آپ ہمارے چیف جسٹس دیپک مشرا سمیت تمام 22 کرپٹ ججز لے لیں اور بدلے میں ہمیں اپنے 5 ججز کا وہ بنچ دے دیں جس کی سربراہی جسٹس آصف سعید کھوسہ کر رہے ہیں۔
مدھوشن کے اس ٹویٹ کو سوشل میڈیا پر کافی مقبولیت حاصل ہو رہی ہے۔

خیال رہے کہ حال ہی میں جموں و کشمیر میں ایک 8 سالہ ننھی آصفہ 8 درندوں نے جنسی زیادتی کا نشانہ بنایا اور پھر بے دردی سے قتل کر دیا ، ملزمان کو سزا دینے میں تاحال بھارت کی عدلیہ اور حکومت ناکام ہیں، مدھوشن کے اس ٹویٹ پر پاکستانی صارفین نے فخریہ انداز میں کہا کہ ہماری عدلیہ بغیر کسی دباؤ کے کام کر رہی ہے، اور ہمیں اپنی عدلیہ اور ججز پر فخر ہے۔