مقبوضہ بیت المقدس، یہودی آباد کاروں کے مسجد اقصیٰ پر دھاوے جاری

78 یہودی آباد کارفول پروف سیکیورٹی میںمسجد میں داخل ہوئے، نام نہاد مذہبی رسومات کی ادائیگی کی آڑ میں مقدس مقام کی بیحرمتی کی

منگل اپریل 17:47

مقبوضہ بیت المقدس (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 17 اپریل2018ء) فلسطین کے مقبوضہ بیت المقدس میں مسجد اقصیٰ میں یہودی آباد کاروں کے دھاوے اور مقدس مقام کی مجرمانہ بے حرمتی کا سلسلہ جاری ہے۔گزشتہ روز 78 یہودی آباد کار واسرائیلی فوج اور پولیس کی فول پروف سیکیورٹی میں مسجد اقصیٰ میں داخل ہوئے اور قبلہ اول میں گھس کرنام نہاد مذہبی رسومات کی ادائیگی کی آڑ میں مقدس مقام کی بے حرمتی کی۔

اطلاعات کے مطابق اسرائیلی فوج نے مسجد الاقصیٰ میںگزشتہ روز دسیوں یہودی آبادکاروں نے دن کے پہلے حصے میں دسیوں یہودیوں نے اسرائیلی پولیس کی فول پروف سیکیورٹی میں نے قبلہ اول کی بے حرمتی کا ارتکاب کیا۔ قبلہ اول پر دھاوا بولنے والوں میں 30 یہودی طلباء اور انٹیلی جنس اداروں کے سول کپڑوں میں ملبوس عہدیدار بھی شامل تھے۔

(جاری ہے)

فلسطینی محکمہ اوقاف کی رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ گزشتہ دو روز کے دوران درجنوں یہودی آباد کاروں نے مسجد اقصیٰ کی کھلے عام بے حرمتی کا ارتکاب کیا۔

عینی شاہدین نے بتایا کہ یہودی آباد کاروں کی بڑی تعداد مراکشی دروازے کے راستے مسجد اقصیٰ میں داخل ہوئی۔ اس موقع پر اسرائیلی فوج اور پولیس کی بھاری نفری تعینات کی گئی تھی جنہوں نے فلسطینی نمازیوں کے ساتھ بدسلوکی کی اور ان کی شناخت پریڈ کے ساتھ انہیں قبلہ اول میں عبادت کیلئے داخل ہونے سے روکنے کی کوشش کرتے رہے۔ صہیونی فوج کی جانب سے روکنے پر فلسطینی مشتعل ہو گئے اور انہوں نے صہیونی فوج اور پولیس کی غنڈہ گردی کے خلاف شدید نعرے بازی کی۔

متعلقہ عنوان :