ملکی معیشت کو مضبوط بنانے اور چوتھے صنعتی انقلاب لانے کیلئے نوجوانوں کو پیشہ ورانہ تربیت اور سائنس کے شعبہ میں جدت لانا ضروری ہے،انجینئر احمد حسن

اتوار اپریل 20:20

فیصل آباد۔22 اپریل(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 22 اپریل2018ء) پاکستان میں چوتھے صنعتی انقلاب کی راہ ہموار کرنے کیلئے انڈسٹری اکیڈیمیا کا تعاون ناگزیر ہے جبکہ پیداواری عمر کے نوجوانوں کو ٹیکنیکل ہنر سکھاکر بے روزگاری کے مسائل پر قابو پانے کے ساتھ ساتھ ترقی کی رفتار کو بھی چین کے برابر لایا جا سکے گا۔ یہ بات فیصل آباد چیمبر آف کامرس اینڈانڈسٹری کے سابق نائب صدر اور ریسرچ اینڈ ڈویلپمنٹ بارے قائمہ کمیٹی کے چیئرمین انجینئر احمد حسن نے یونیورسٹی آف انجینئرنگ اینڈ ٹیکنالوجی کے فیصل آباد کیمپس میں’’ سائنس ٹیکو‘‘ 18 کی افتتاحی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہی۔

انہوں نے کہا کہ ٹیکنالوجی اور انڈسٹری کو ایک پلیٹ فارم پر اکٹھا کرنے کیلئے انڈسٹری اور اکیڈیمیا لینکجز کے درمیان مستقل اور قابل عمل روابط ضروری ہیں۔

(جاری ہے)

انہوں نے کہا کہ جدید ٹیکنالوجی کو صنعتوں میں متعارف کرانے کے لئے فیصل آباد چیمبر میں باضابطہ ریسرچ اینڈ ڈویلپمنٹ ڈیپارٹمنٹ قائم کیا گیا ہے ،یہ ڈیپارٹمنٹ مجوزہ پالیسیوں کے اثرات اور مضمرات کا باریک بینی سے جائزہ لے کر حکومت کو ملکی معیشت پر اس کے ممکنہ اثرات کے بارے میں بھی آگاہ کر تا ہے۔

انھوں نے بتایا کہ چین میں مزدوروں کی کارکردگی 90 فیصد جبکہ پاکستان میں یہ قابل افسوس ہے۔انھوں نے کہا کہ پاکستان آبادی کے لحاظ سے چھٹا بڑا ملک ہے تیزی سے بڑھتی آبادی اور وافر قدرتی وسائل کی بدولت ہم ممکنہ طو رپر 55 فیصد باصلاحیت نوجوانوں کو معیاری تعلیم اور پیشہ وارانہ تربیت دے کر اقتصادی ترقی کی شرح کو چین کے برابر لا کر دنیا کی تیز ی سے ترقی کرنے والی معیشت بنا سکتے ہیں۔

انھوں نے کہا کہ یو ای ٹی پاکستان کی وہ اعلیٰ یونیورسٹی ہے جو انجینئرنگ اینڈ ٹیکنالوجی کے شعبہ میں نمایاں کردار ادا کر رہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ تعلیم مکمل کرنے کے بعد یو ای ٹی کے طلبہ سائنس اور ٹیکنالوجی کے میدان میں اپنی کامیابیوں کا لوہا منوا رہے ہیں ۔ انھوں نے سائنس ٹیکو کے کامیاب انعقاد پر اس کے منتظمین کو مبارکباد دی اور کہا کہ ایسے ایونٹ کے انعقاد سے پاکستان میں ٹیکنالوجی اور سائنسی میدانوں میں ترقی کی راہیں ہموار ہوں گی اور اس میں شرکت کرنے والے طلبہ کو سیکھنے کا موقع بھی ملتا ہے ۔

تقریب کے آخر میں انھوں نے فیصل آباد چیمبر کی طرف سے یونیورسٹی کو ایک لاکھ روپے کا چیک بھی پیش کیا،بعد میں انہوں نے سائنس ٹیکو ۔18 میں لگائے جانے والے سٹالوں کا بھی معائنہ کیا اور طلبہ کی طرف سے تیار کئے جانے والے ماڈلز اور ٹیکنالوجی کو سراہا۔