لیبیاکے شہر درنہ میںدہشت گردوں کے گڑھ پر فوج کا کنٹرول

دہشت گردو ں کا الواحہ کمپنی کی ملکیت تیل پائپ لائنوں پر حملہ،شدید آگ بھڑک اٹھی

پیر اپریل 11:50

طرابلس(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 23 اپریل2018ء) لیبیا میں سرکاری فوج کے ذرائع نے بتایا ہے کہ ملک کے شمال مشرق میں واقع شہر درنہ کے داخلی راستے پر الحیلہ عسکری کیمپ پر کنٹرول حاصل کر لیا گیا ہے۔ یہاں پر القاعدہ تنظیم سے تعلق رکھنے والے گروپوں نے قدم جما رکھے تھے۔ادھر مسلح افراد نے لیبیا کی الواحہ کمپنی کی ملکیت تیل کی پائپ لائنوں پر حملہ کیا۔

دہشت گرد حملے کے نتیجے میں تیل کی سپلائی لائن میں آگ بھڑک اٹھی۔روسی نیوز ایجنسی نے ذرائع کے حوالے سے بتایا کہ الحیلہ کے اطراف میں لیبیا کی فوج اور دہشت گرد جماعتوں کے درمیان جھڑپیں ہوئیں جن کے بعد دہشت گرد جماعتوں کے گڑھ الحیلہ عسکری کیمپ کا مکمل کنٹرول لے لیا گیا۔دوسری جانب لیبیا کی فوج کے سرکاری ترجمان میجر جنرل احمد المسماری نے باور کرایا کہ فضائی طیاروں نے بنی ولید شہر میں السدادہ کے نزدیک دہشت گرد جماعتوں کے ٹھکانوں پر حملے کیے۔

(جاری ہے)

المسماری نے ایک پریس کانفرنس میں واضح کیا کہ حملوں میں دہشت گرد جماعتوں کے استعمال میں مسلح گاڑیوں کو بھی نشانہ بنایا گیا۔یاد رہے کہ درنہ لیبیا کے صوبے برقہ کا واحد شہر ہے جو ابھی تک مجلس شوریٰ مجاہدین درنہ کے کنٹرول میں ہے۔ یہ ایک مسلح گروپ ہے جس میں القاعدہ تنظیم کی ہمنوا جماعتوں کے عناصر شامل ہیں۔ادھر مسلح افراد نے لیبیا کی الواحہ کمپنی کی ملکیت تیل کی پائپ لائنوں پر حملہ کیا۔ دہشت گرد حملے کے نتیجے میں تیل کی سپلائی لائن میں آگ بھڑک اٹھی۔