انٹر میڈیٹ پارٹ سیکنڈ و کمپوزٹ کے سالانہ امتحانات 5 مئی سے شروع ہو ں گے

پیر اپریل 15:02

فیصل آباد۔23 اپریل(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 23 اپریل2018ء) اعلیٰ و ثانوی تعلیمی بورڈ فیصل آباد ، راولپنڈی ، گوجرانوالہ، ساہیوال ، سرگودھا ، ملتان ،بہاولپور ، ڈیرہ غا زی خان ، لاہور سمیت صوبہ بھر کے تمام 9تعلیمی بورڈز کے زیر اہتمام انٹر میڈیٹ پارٹ سیکنڈ و کمپوزٹ2018ء کے سالانہ امتحانات 5مئی بروز ہفتہ سے جبکہ پارٹ ون کے سالانہ امتحانات 22مئی بروز منگل سے شروع ہو ں گے جس میں شرکت کرنے والے طلباء و طالبات کو رولنمبر سلپوں کی فراہمی شروع کر دی گئی ہے اور ڈیٹ شیٹس بھی جاری کی جا رہی ہیں نیز طلباء و طالبات سے کہا گیا ہے کہ اگر انہیں رواں ہفتہ کے دوران رولنمبر سلپ موصول نہ ہو تو وہ اپنے متعلقہ بورڈ سے رابطہ کر سکتے ہیں۔

پنجاب ایجوکیشن بورڈز کمیٹی آف چیئر مینز کے ترجمان نے بتایاکہ انٹر میڈیٹ پارٹ ٹو اور پارٹ ون کے سالانہ امتحانات کے شفاف انعقاد کیلئے تمام تیاریاں مکمل کر لی گئی ہیں اور امتحانی عملہ کی ڈیوٹیاں لگا کر انہیں مناسب تربیت فراہ م کرنے کا سلسلہ بھی شروع کر دیا گیا ہے۔

(جاری ہے)

دریں اثناء بورڈ آف انٹر میڈیٹ اینڈ سیکنڈری ایجوکیشن فیصل آباد کے ترجمان نے بتایاکہ انٹر میڈیٹ پارٹ سیکنڈو کمپوزٹ کے سالانہ امتحانات 2018ء شیڈول کے مطابق 5مئی بروز ہفتہ سے شروع ہو کر 21مئی بروز پیر تک جاری رہیں گے اسی طرح پارٹ فرسٹ کے سالانہ امتحانات کا آغاز 22مئی بروز منگل سے ہو گا اور یہ امتحانات 6جون تک جاری رہیں گے۔

انہوںنے بتایاکہ عملی امتحانات کا انعقاد 8جون بروز جمعہ سے 2اگست بروز جمعرات تک ہو گا۔انہوںنے بتایاکہ پارٹ فرسٹ و سیکنڈ کے امتحانات میں مجموعی طور پر 188153طلباء و طالبات شریک ہو ں گے۔انہوںنے بتایاکہ انٹر میڈیٹ کے طلباء و طالبات کیلئے فیصل آباد ڈویژن کے چاروں اضلاع فیصل آباد ، جھنگ، ٹوبہ ٹیک سنگھ ، چنیوٹ میں طلباء کیلئے 145،طالبات کیلئی 161اور کمبائنڈ 4 جبکہ مجموعی طور پر 310 سنٹر بنائے گئے ہیں ۔

انہوںنے بتایاکہ پارٹ فرسٹ کے بوائز کیلئے 161،گرلز کیلئے 165 اور کمبائنڈ 4 جبکہ مجموعی طور پر 330 امتحانی مراکزکا قیام عمل میں لایا گیا ہے۔انہوںنے بتایا کہ فیصل آباد ڈویژن کے تمام سی ای اوز ایجوکیشن اور ڈائریکٹر و ڈپٹی ڈائریکٹر کالجز کے تعاون سے نہ صرف فرض شناس و اچھی شہرت کا حامل عملہ تعینات کیا گیا ہے بلکہ بوٹی مافیا کے قلع قمع کیلئے موبائل انسپکٹرز اور خصوصی سکواڈز بھی بنائے گئے ہیں جو مختلف سنٹروں پر اچانک چھاپے مار کر امتحانات پر اثرانداز ہونے کی کوشش کرنے والے عناصر کی بیخ کنی میں اپنا بھرپور کردار ادا کریں گے۔