ایرانی جوہری معاہدے کو ختم کرنے سے جنگ کا خطرہ ہو گا، اقوام متحدہ

امریکہ ایران سے کیے جانے والے بین الاقوامی جوہری معاہدے سے باہر نہ نکلے،سیکرٹری جنرل کی گفتگو

جمعرات مئی 11:59

نیویارک(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 03 مئی2018ء) اقوام متحدہ کے سیکریٹری جنرل اینتونیو گوتریز نے امریکہ پر زور دیا ہے کہ وہ ایران سے کیے جانے والے بین الاقوامی جوہری معاہدے سے باہر نہ نکلے۔سیکریٹری جنرل اینتونیو گوتریز نے برطانوی نشریاتی ادارے سے بات چیت کرتے ہوئے کہاکہ اگر معاہدہ باقی نہ رہا تو اس صورت میں جنگ کا خطرہ ہو سکتا ہے۔انھوں نے کہا کہ 2015 میں ایران اور چھ عالمی طاقتوں کے درمیان ہونے والے معاہدے کو ختم نہیں کیا جانا چاہیے جب تک اس سے بہتر متبادل سامنے نہیں آتا ہے۔

(جاری ہے)

وضح رہے کہ ایران اور چھ عالمی طاقتوں امریکہ،، چین،، روس،، جرمنی،، فرانس اور برطانیہ کے درمیان 2015 میں ہونے والے ایک معاہدے کے تحت ایران نے اپنے ایٹمی پروگرام کو روکنے کا وعدہ کیا تھا جس کے بدلے میں مغربی ملکوں نے اس پر عائد پابندیاں اٹھا لی تھیں۔ایسے خدشات تھے کہ ایران اس پروگرام کو جوہری ہتھیار بنانے میں استعمال کرے گا۔اس معاہدے کے تحت جسے سرکاری طور پر مشترکہ جامع عمل ایکشن (جے سی سی او ای) کا نام دیا گیا ایران سینٹری فیوجز کی تعداد میں کمی کرے گا جو مشینیں یورینیم کو مضبوط بنانے کے لیے استعمال کرتی ہیں۔