سعودی عرب، خواتین کو ٹیکسی چلانے کی اجازت، بچوں اور طالبات کو تحفظ ملے گا

جمعہ مئی 10:30

سعودی عرب، خواتین کو ٹیکسی چلانے کی اجازت، بچوں اور طالبات کو تحفظ ..
ریاض۔ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 04 مئی2018ء) خواتین کو ٹیکسی چلانے کی اجازت پر مقامی شہریوں کا کہنا ہے کہ خواتین کو ٹیکسی چلانے کی اجازت سے سب سے بڑا فائدہ بچوں اور دوسرا فائدہ طالبات کو حاصل ہو گا جو آسانی سے سکول، کالج آ جا سکیں گی۔ سعودی اخبار سے اظہار خیال کرتے ہوئے عام شہریوں کا کہنا تھا کہ خواتین کو ٹیکسی چلانے کی اجازت ملنے کا سب سے زیادہ فائدہ بچوں اور اس کے بعد طالبات کو پہنچے گا جو مرد ڈرائیوروں کے پریشان کن جملوں سے محفوظ رہیں گی اور تحفظ کے ساتھ سکول اور کالج جاسکیں گی۔

(جاری ہے)

دوسری جانب مخالفین کا کہنا ہے کہ ایسے عالم میں جبکہ مرد حضرات ٹریفک کے رش میں مشکلات سے دوچار ہوتے ہیں اور انہیں راستے بھی اچھی طرح سے معلوم ہوتے ہیں خواتین ڈرائیور رش کا سامنا نہیں کرسکیںگی اور راستوں سے بھرپور واقفیت نہ ہونے کے باعث خود بھی پریشان ہو ں گی اور سواریاں بھی الجھن میں پڑیں گی۔ واضح رہے کہ ٹرانسپورٹ اتھارٹی نے خواتین کو فیملی ٹیکسی اور طالبات کیلئے ٹیکسی کے اجازت نامہ جاری کرنے کا اصولی فیصلہ کر لیا ہے۔ اتھارٹی نے اس حوالے سے بہت ساری شرائط بھی جاری کی ہیں۔ خلاف ورزیوں کی نشاندہی کر کے ان پر جرمانے بھی مقرر کر دیئے ہیں۔

متعلقہ عنوان :