حکومت عوام کو بیماریوں سے بچائو کے شعور کو اجاگر کرنے اور صحت کی سہولیات کی فراہمی کیلئے بھرپور کوششیں کر رہی ہے،وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی کا مقامی ہسپتال کی تقریب سے خطاب

اتوار مئی 00:20

اسلام آباد ۔ 5 مئی (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 06 مئی2018ء) وزیراعظم شاہد خاقان عباسی نے کہا ہے کہ وفاقی حکومت عوام کو بیماریوں سے بچائو کے شعور کو اجاگر کرنے اور صحت کی سہولیات کی فراہمی کیلئے بھرپور کوششیں کر رہی ہے۔ وہ ہفتہ کو شفاء انٹرنیشنل ہسپتال میں 2012 ء سے اب تک جگر کے 660 کامیاب آپریشنز کی کامیابی کے موقع پر دوسرے سیمپوزیم ’’اے میڈیکل مارول‘‘ سے خطاب کر رہے تھے۔

تقریب میں چیف ایگزیکٹو آفیسر شفا انٹرنیشنل ڈاکٹر منظور الحق قاضی، چیئرمین بورڈ آف ڈائریکٹر شفا انٹرنیشنل ڈاکٹر حبیب الرحمان، پاکستان میں پہلے جگر پیوندکاری کے بانی فیصل سعود ڈار اور چیئرمین پاکستان سوسائٹی آف ہیپاٹولوجی پروفیسر جاوید اقبال فاروقی سمیت ملک بھر سے آئے ہوئے نامور ماہرین صحت نے شرکت کی۔

(جاری ہے)

وزیراعظم نے اس موقع پر کہا کہ صحت کی بنیادی سہولیات کی فراہمی حکومت کی اولین ذمہ داری ہے جو وہ ذرائع کی کمی اور آئینی رکاوٹوں کے باوجو فراہم کر رہی ہے۔

وزیراعظم نے کہا کہ صحت کی فراہمی صوبائی معاملہ ہے تاہم وفاقی حکومت شہریوں کو بہتر صحت کی سہولیات پہنچانے کیلئے صوبوں کی ہرممکن مدد کر رہی ہے۔ شفاء انٹرنیشنل کی صحت کے سلسلہ میں خدمات کو سراہتے ہوئے وزیراعظم نے کہا کہ صحت کی سہولت کی فراہمی میں پاکستان میں سب سے زیادہ پیش رفت ہوئی ہے۔ انہوں نے کہا کہ نجی شعبے کا کردار صحت کے شعبے میں فرق کو دور کرنے کے لئے ضروری ہے اور اس سلسلے میں شفا انٹرنیشنل ہسپتال کی قیادت کرسکتی ہے۔

وزیر اعظم نے کہا کہ حکومت نے حال ہی میں قومی ہیپاٹائٹس اسٹریٹجک فریم ورک کو اپنایا ہے تاکہ قومی وائریل ہیپاٹائٹس کی روک تھام اور اس کا علاج کیا جا سکے ۔انہوں نے ڈاکٹر ظہیر کی طرف سے قائم کردہ ایس آئی ایچ کے ابتدائی دنوں کو یاد کیا اور کہا کہ ہسپتال کی موجودہ کامیابیوں کو حقیقت میں بانی کے عزم کی گواہی تھی۔انہوں نے پیشہ ور ڈاکٹروں کی خدمات کو سراہا، جنہوں نے دنیا بھر میں بہت سارے مواقع کے باوجود شفا انٹرنیشنل ہسپتال میں شامل ہونے کی ترجیح دی. ہے۔

وزیر اعظم عباسی نے ملک میں ہیپاٹائٹس کے بڑھتے ہوئے مرض کی نشاندہی کرتے ہوئے وفاقی اور صوبائی حکومتوں سے کہا کہ اس بیماری کے خلاف ملک کر کوششیں کریں۔ بعد ازاںوزیراعظم نے جگر ٹرانسپلانٹ سرجری کے سلسلی میں مقامی اور غیر ملکی ڈاکٹروں میں شیلڈز بھی تقسیم کیں۔