پاکستان دنیا بھر میں 5 سال سے کم عمر کے بچوں کی اموات کے لحاظ سے 8ویں نمبر پر آگیا

اتوار مئی 13:10

فیصل آباد۔6 مئی(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 06 مئی2018ء) پاکستان دنیا بھر میں 5 سال سے کم عمر کے بچوں کی اموات کے لحاظ سے 8ویں نمبر پر آگیا ہے جبکہ صوبہ پنجاب میں پیداہونے والے ہرایک ہزار بچوں میں سے 82 بچے اپنی پہلی سالگرہ منانے سے قبل ہی مالک حقیقی سے جاملتے ہیں جس کی بڑی وجہ ماں وبچے کی صحت کے بارے میں شعور و آگاہی نہ ہونے کے ساتھ ساتھ بچوں کی پیدائش کادرمیانی وقفہ اور نوزائیدہ بچوں و مائوں میں غذائی اجزاء کی کمی بھی ہے نیز 19فیصد بچے ڈائریاکے باعث موت کے منہ میں چلے جاتے ہیں لہٰذا 13 فیصد بچوں کی زندگیاں صرف اور صرف ماں کا دودھ پلانے اور 15 فیصد بچوں کی صحت او آر ایس کے استعمال سے برقراررکھتے ہوئے انہیں موت کی آغوش میں جانے سے بچایاجاسکتاہے۔

پنجاب میڈیکل کالج ، الائیڈ ہسپتال فیصل آباد کے ماہرین طب نے بتایاکہ اس سلسلہ میں محکمہ صحت کے ساتھ ساتھ سیاسی ، دینی ، مذہبی ، سماجی ، فلاحی ، رفاحی تنظیموں اور صحافیوں و علماء سمیت سول سوسائٹی کے تمام مکاتب فکر کو اپنا بھرپور کردار ادا کرنا ہو گا۔

(جاری ہے)

انہوںنے کہاکہ اس سلسلہ میں میڈیاکے کردار سے انکار کسی بھی صورت ممکن نہیں کیونکہ میڈیا رائے عامہ ہموار کرنے اور لوگوں کو ترغیب دینے میں اہم حیثیت کا حامل ہے ۔

انہوںنے بتایاکہ ماں و بچے کی صحت کے ہفتہ کے دوران محکمہ صحت کے ویکسینیٹرز اور لیڈی ہیلتھ ورکرزنے بچوں کو حفاظتی ٹیکے لگائے جبکہ انہیں پیٹ کے کیڑوں کے خاتمہ کیلئے گولیاں بھی فراہم کی گئیں۔ اانہوںنے کہاکہ ماں اور بچے کی صحت کے ہفتہ کے دوران جہاں حاملہ خواتین کو حفاظتی ٹیکوں کے کورس کرائے گئے وہیں دو سال تک کی عمرکے بچوں کو حفاظتی ٹیکے ،دو سے پانچ سال تک کی عمر کے بچوں کوپیٹ کے کیڑوں کی دوائی ،پانچ سال تک کی عمر کے بچوں کو پولیوسے بچائو کے قطرے پلانے کے علاوہ چھوٹے بچوں کو نمونیہ، اسہال اور خسرہ سے بچانے کیلئے حفاظتی تدابیر سے والدین کو آگاہ کیاگیا۔