نایاب ہرن شکار کیس، عدالت نے بالی ووڈ ہیرو سلمان خان کو حاضری سے مستثنیٰ قرار دیدیا

پیر مئی 20:46

نایاب ہرن شکار کیس، عدالت نے بالی ووڈ ہیرو سلمان خان کو حاضری سے مستثنیٰ ..
ممبئی (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 07 مئی2018ء) بالی ووڈ کے دبنگ ہیرو سلمان خان کو عدالت نے 20 سال پرانے نایاب ہرن کے شکار کے کیس میں حاضری سے مستثنیٰ قرار دے دیا۔۔سلمان خان پر 1998 میں راجستھان میں فلم ’ہم ساتھ ساتھ ہیں‘ کی شوٹنگ کے دوران نایاب نسل کے ہرن کا شکار کرنے کا مقدمہ دائر ہے جس پر گزشتہ ماہ 5 اپریل کو عدالت نے انہیں 5 سال قید اور 10 ہزار روپے جرمانے کی سزا سنائی تھی۔

جودھپور کی ٹرائل عدالت نے سلمان خان کے علاوہ دیگر تمام اداکاروں تبو، سیف علی خان، سونالی باندرے، نیلم اور شنیت سنگھ کو ثبوت نہ ہونے کی بناء پر بری کردیا تھا۔عدالتی فیصلے کے بعد سلمان خان کو 5 اپریل کو سینٹرل جیل جودھپور منتقل کیا گیا تھا، جس کے بعد اداکار نے عدالتی فیصلے کو ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن کورٹ میں چیلنج کیا تھا۔

(جاری ہے)

ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن کورٹ نے 7 اپریل کو ان کی ضمانت منظور کرتے ہوئے انہیں جیل سے رہا کرنے کا حکم دیتے ہوئے آئندہ سماعت 7 مئی کو مقرر کی تھی۔

عدالت نے سلمان خان کو حکم دیا تھا کہ وہ 7 مئی کو ہونے والی سماعت میں خود پیش ہوں اور عدالتی احکامات کے بغیر ملک سے باہر نہ جائیں، بعد ازاں ہائی کورٹ نے اداکار کو بیرون ملک سفر کی اجازت دی تھی۔میڈیا رپورٹ کے مطابق سلمان خان اپنے وکلاء اور بہنوں سمیت 7 مئی کو ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن کورٹ جودھپور کے سامنے پیش ہوئے، جہاں کیس کی مختصر سماعت ہوئی۔

سلمان خان کے وکلاء نے عدالت میں اداکار کو حاضری سے استثنیٰ قرار دینے کی درخواست جمع کرائی، جسے عدالت نے منظور کرلیا۔۔عدالت نے درخواست کو منظور کرتے ہوئے قرار دیا کہ آئندہ سماعت پر سلمان خان کی ذاتی حاضری کی ضرورت نہیں۔۔عدالت نے سلمان خان کی درخواست منظور کرتے ہوئے کیس کی اگلی سماعت 17 جولائی کو مقرر کی ہے۔اب کیس کی آئندہ سماعت 2 ماہ بعد ہوگی جس میں اداکار کے ذاتی طور پر حاضر ہونے کی ضرورت نہیں۔