آئرلینڈ نے پاکستان کو اپ سیٹ شکست دینے کیلئے منصوبہ تیار کر لیا

آئرلینڈ کانٹی تجربے اور کنڈیشنز کی بدولت پاکستان کو ہرانے کا خواہاں ہے ، کپتان ولیم پورٹر فیلڈ تاریخی طور پر دیکھا جائے تو جب برصغیر کی ٹیمیں ان کنڈیشنز میں آتی ہیں تو ایڈجسٹ ہونے میں تھوڑا وقت لگتا ہے ، انٹرویو

بدھ مئی 21:02

آئرلینڈ نے پاکستان کو اپ سیٹ شکست دینے کیلئے منصوبہ تیار کر لیا
ڈبلن(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 09 مئی2018ء) آئرلینڈ کے کپتان ولیم پورٹر فیلڈ نے کہا ہے کہ مقامی کنڈیشنز اور انگلش کانٹی کا تجربہ پاکستان کے خلاف پہلے ٹیسٹ میچ میں ان کے لیے مددگار ثابت ہو گا۔انٹرنیشنل کرکٹ کونسل(آئی سی سی) نے گزشتہ سال آئرلینڈ اور افغانستان کو ٹیسٹ اسٹیٹس دیتے ہوئے پانچ روزہ فارمیٹ کھیلنے کا اہل قرار دیا تھا۔۔۔افغانستان کی ٹیم اگلے ماہ بھارت کے خلاف اپنا ڈیبیو ٹیسٹ کھیلے گی تاہم آئرلینڈ کی ٹیم ڈبلن میں رواں ہفتے 11مئی سے کھیلے جانے والے پہلے ٹیسٹ کے ذریعے کھیل کا سب سے بڑا فارمیٹ کھیلنے والی دنیا کی 11ویں ٹیم بن جائے گی۔

1877 میں میلبرن کرکٹ گرانڈ پر کھیلے گئے کرکٹ کی تاریخ کے پہلے ٹیسٹ میچ میں آسٹریلیا نے انگلینڈ کو شکست دی تھی تاہم اس کے بعد سے تاریخ میں آج تک کوئی بھی ٹیم اپنے پہلے ٹیسٹ میچ میں فتح حاصل نہیں کر سکی اور اگر آئرلینڈ ایسا کرنے میں کامیاب رہتی ہے تو یہ ایک بہت بڑا اپ سیٹ ہو گا۔

(جاری ہے)

میڈیا رپورٹ کے مطابق آئرلینڈ کی ٹیم ایسا کرنے کی اہلیت رکھتی ہے اور وہ 11 سال قبل یہ ثابت بھی کر چکی ہے جب 2007 کے ورلڈ کپ میں اس نے پاکستان کو اپ سیٹ شکست دے کر ٹورنامنٹ سے باہر کردیا تھا لیکن ٹیسٹ کرکٹ ان کیلئے بڑا امتحان ہو گا۔

آئرلینڈ کے کپتان سوئنگ کے لیے سازگار کنڈیشنز کی بدولت پاکستان کے خلاف عمدہ کارکردگی کیلئے پرامید ہیں کیونکہ مئی میں بارشوں کے سیزن اور ٹھنڈ کی وجہ سے گیند بہت زیادہ سوئنگ ہوتا ہے اور یہ بات کسی سے بھی ڈھکی چھپی نہیں کہ پاکستان سمیت ایشیائی بلے بازوں کو سوئنگ کے خلاف مشکلات پیش آتی ہیں۔پورٹرفیلڈ نے کہا کہ یہ آئرلینڈ ہے، مئی کا مہینہ ہے لہذا یہ میچ ہمارے لیے سازگار کنڈیشنز میں ہو گا۔

تاریخی طور پر دیکھا جائے تو جب برصغیر کی ٹیمیں ان کنڈیشنز میں آتی ہیں تو انہیں ایڈجسٹ ہونے میں تھوڑا وقت لگتا ہے۔ان کا کہنا تھا کہ پاکستان کے خلاف ٹیسٹ میچ میں ہمارے پاس اسکور کرنے کے مواقع محدود ہوں گے اور ہمیں ہر بری گیند سے فائدہ اٹھانا ہو گا جبکہ بالرز کے ساتھ بھی یہی معاملہ ہو گا جہاں بلے باز انہیں دبا میں رکھیں گے اور ان کے پاس غلطی کرنے کی گنجائش بہت کم ہو گی تاہم پورٹر فیلڈ نے کہا کہ ہم 4روزہ کرکٹ کھیل چکے ہیں اور یہ ٹیسٹ میچ سے زیادہ مختلف نہیں، ہمارے بیٹسمین اچھی بالنگ اٹیک کے خلاف رنز کر چکے ہیں اور ہمارے بالرز بھی اچھے بلے بازوں کو آٹ کر چکے ہیں۔۔