لاہور ہائیکورٹ ، چیرمین پلاننگ اینڈ ڈویلپمنٹ بورڈ کی غیر قانونی تعیناتی کالعدم قرار دینے کی درخواست پر فریقین کے وکلاء کے دلائل مکمل،فیصلہ محفوظ

جمعرات مئی 21:53

لاہور (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 10 مئی2018ء) لاہور ہائیکورٹ کے جسٹس ساجد محمود سیٹھی نے پلاننگ اینڈ ڈویلپمنٹ بورڈ کے چیئرمین کی غیر قانونی تعیناتی کالعدم قرار دینے کیلئے درخواست پر فریقین کے وکلاء کے دلائل مکمل ہونے کے بعد فیصلہ محفوظ کر لیا۔

(جاری ہے)

درخواست گزار حسین حیدر کے وکیل بئیرسٹر سید محمد جاوید اقبال جعفری نے موقف اختیار کیاکہ قانون کے تحت پلاننگ اینڈ ڈویلپمنٹ بورڈ کو ختم کر کے محکمہ پلاننگ اینڈ ڈویلپمنٹ تشکیل دیا گیا،انہوں نے کہاکہ محکمہ پلاننگ اینڈ ڈویلپمنٹ کے اربوں روپے کے بجٹ کونام نہادبورڈ کے ذریعے پراجیکٹس میں لگانے اور غیر قانونی بھرتیاں کرنے کیلئے استعمال کیا جا رہا ہے،انہوں نے کہا کہ قانون کے برعکس پلاننگ اینڈ ڈویلپمنٹ بورڈ تشکیل دیتے ہوئے چیئرمین جہانزیب خان کی تعیناتی غیرقانونی طور پر کی گئی، انہوں نے استدعا کی کہ چیئرمین پلاننگ اینڈ ڈویلپمنٹ بورڈ جہانزیب خان کی تعیناتی کالعدم قرار دی جائے،مزید استدعا کی گئی کہ چیئرمین پلاننگ اینڈ ڈویلپمنٹ بورڈ جہانزیب خان کی جانب سے کئے جانے والے غیر قانونی اقدامات کو کالعدم قرار دا جائے، سرکاری وکیل نے جواب داخل کراتے ہوئے کہا کہ پلاننگ اینڈ ڈویلپمنٹ بورڈ انتظامی طور پر قائم کیا گیا ،جس پر عدالت نے فریقین کے وکلاء کے دلائل سننے کے بعد درخواست پر فیصلہ محفوظ کر لیا۔