پی آئی اے میں مارچ 2008ء سے لے کر اب تک انتظامی‘ آپریشنل‘ سکیورٹی نقائص‘ پرواز کے تحفظ اور مالیات سے متعلق مجموعی طور پر 632 انکوائریاں کی گئیں، شہری ہوابازی ڈویژن کا قومی اسمبلی میں تحریری جواب

بدھ مئی 13:18

پی آئی اے میں مارچ 2008ء سے لے کر اب تک انتظامی‘ آپریشنل‘ سکیورٹی نقائص‘ ..
اسلام آباد۔ 23 مئی(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 23 مئی2018ء) قومی اسمبلی کو بتایا گیا ہے کہ مارچ 2008ء سے لے کر اب تک پاکستان انٹرنیشنل ایئرلائن میں انتظامی‘ آپریشنل‘ سیکیورٹی نقائص‘ پرواز کے تحفظ اور مالیات سے متعلق مجموعی طور پر 632 انکوائریاں کی گئی ہیں۔

(جاری ہے)

بدھ کو قومی اسمبلی میں شہری ہوابازی ڈویژن کی جانب سے مراد سعید کے سوال کے تحریری جواب میں بتایا گیا کہ اس ضمن میں مارچ 2008ء سے لے کر اب تک مجموعی طور پر 632 انکوائریاں کی گئیں جن میں سے 244 ملازمین کی برطرفی و برخاستگی عمل میں لائی گئی۔

107 ملازمین کی سرزنش کی گئی۔ 69 کے کیسز بند کئے گئے۔ 78 ملازمین کو ناراضگی‘ نصیحت و تنبیہ کے لیٹر جاری کئے گئے۔ 32 ملازمین کو قبل از وقت ریٹائر یا انہیں جبری ریٹائرمنٹ پر بھیج دیا گیا۔ 65 ملازمین کے خلاف اظہار وجوہ کا نوٹس واپس لینا پڑا۔ 26 ملازمین کی بریت ثابت ہوئی‘ 9 ملازمین کی سالانہ انکریمنٹ کو روکا گیا جبکہ دو ملازمین کی تنزلی کی گئی۔ ایوان کو بتایا گیا کہ عدالت کے حکم پر مذکورہ عرصہ کے دوران پی آئی اے کے تین ملازمین کو بحال کیا گیا۔