کچھ شرم کرو اپنے الفاظ واپس لو،فواد چوہدری اور جاوید لطیف آمنے سامنے آ گئے

تمہارے لیڈر کا کردار سب کے سامنے ہے،جاوید لطیف کا طعنہ،کرادار تو آپکا بھی سب کے سامنے ہے 5سالوں میں37سی این جی پمپ آپ نے لگا لئیے ہیں ،فواد چوہدری کا جوابی وار

Syed Fakhir Abbas سید فاخر عباس ہفتہ مئی 22:08

کچھ شرم کرو اپنے الفاظ واپس لو،فواد چوہدری اور جاوید لطیف آمنے سامنے ..
اسلام آباد(اردو پوائنٹ تازہ ترین اخبار۔26 مئی 2018ء) کچھ شرم کرو اپنے الفاظ واپس لو،فواد چوہدری اور جاوید لطیف آمنے سامنے آ گئے۔۔نواز شریف پر تنقید کرنے پر جاوید لطیف نے فواد چوہدری کو طعنہ دیا کہ تمہارے لیڈر کا کردار سب کے سامنے ہے۔فواد چوہدری نے جوابی وار کرتے ہوئے کہا کہ کرادار تو آپکا بھی سب کے سامنے ہے 5سالوں میں37سی این جی پمپ آپ نے لگا لئیے ہیں ۔

فصیلات کے مطابق انتخابات کا وقت قریب ہے۔جیسے جیسے انتخابات کا وقت قریب آتا جا رہا ہے ویسے ویسے سیاسی ماحول میں درجہ حرارت بڑھتا جارہا ہے اور سیاسی گرما گرمی اپنے عروج پر پہنچتی جا رہی ہے۔سیاست دان ایک دوسرے کو نیچا دکھانے کے لیے ایک دوسرے پر کیچڑ اچھا رہے ہیں جس کا ردعمل بعض اوقات شدید بھی ہو سکتا ہے اور ایسا ہی کچھ ہی آج نجی ٹی وی کے ایک ٹاک شو میں ہوا جہاں پاکستان تحریک انصاف کے ترجمان فواد چوہدری نے مسلم لیگ ن کے رہنما جاوید لطیف کو آڑے ہاتھوں لیا۔

(جاری ہے)

دونوں رہنما حال ہی میں مسلم لیگ ن چھوڑ کر پاکستان تحریک انصاف میں شمولیت اختیار کرنے والے ممبران کے حوالےس ے بات کر رہے تھے۔جاوید لطیف نے تحریک انصاف میں جانے والے ممبران کو لوٹا کہا تو فواد چوہدری کا کہنا تھا کہ جب آپ کے پاس تھے یہ ممبرا تو ٹھیک تھے اب لوٹا ہو گئے تو جاوید لطیف نے کہا کہ ہم تو گناہگاروں کی جماعت ہیں تو آپ ہی کچھ بہتر کر لیتے جس پر فواد چوہدری نے کہا کہ فرشتوں کی جماعت لیڈر سے ہوتی ہے آپ ابلیس کی پیروی کر رہے ہیں اور ہم شریف آدمی کی جس پر بات بڑھ گئی اور جاوید لطیف نے کہا کہ تم کچھ شرم کرو ،اپنے الفاظ واپس لو، تمہیں شرم ہی نہیں آتی تمہارے لیڈر کا کردار سب جانتے ہیں جس پر فواد چوہدری نے جوابی وار کرتے ہوئے کہ کردار تو سب آپکا بھی جانتے ہیں پچھلے5 سالوں میں آپ نے 37 سی این جی پمپ لگا لئیے ہیں۔

جاوید لطیف کا کہنا تھا کہ میں کم از کم لوٹا نہیں ہوں جس پر فواد چوہدری نے کہا کہ آپ نے اتنے پمپ لگا لئیے ہیں آپ نواز شریف کو کیوں چھوڑیں گے بھلا۔اس بات پر بحث مزید بڑھ گئی۔