فغانستان ، ہلمند میں خودکش حملہ ، 8 فوجی ہلاک،متعدد زخمی

طالبان نے حملے کی ذمہ داری قبول کر لی ، اس میں100سے زائد افغان سکیورٹی اہلکار ہلاک ہوئے ،طالبان کا دعویٰ

اتوار مئی 21:20

کابل (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 27 مئی2018ء) افغانستان کے جنوبی صوبہ ہلمند میں ایک خودکش بم حملے میں 8 فوجی ہلاک اور متعدد زخمی ہوگئے،،طالبان نے حملے کی ذمہ داری قبول کرتے ہوئے اس میں ایک سو سے زائد افغان سکیورٹی اہلکاروں کی ہلاکت کا دعوی ٰ کر دیا ۔اتوار کی صبح افغانستان کے جنوبی صوبہ ہلمند میں خودکش بمبار نے بارود سے بھرے ایک چھوٹے ٹرک میں ایک فوجی اڈے کے قریب دھماکا کیا جس کے نتیجے میں 8 فوجی ہلاک اور متعدد زخمی ہوگئے طالبان نے اس حملے کی ذمہ داری قبول کرتے ہوئے اس میں ایک سو سے زائد افغان سکیورٹی اہلکاروں کی ہلاکت کا دعوی کیا ہے۔

ہلمند افغانستان میں پوست کی ایک کاشت کرنے والا ایک بڑا صوبہ ہے جس کے اکثر اضلاع پر یا تو طالبان کا قبضہ ہے یا عسکریت پسند وہاں لڑائی میں مصروف ہیں۔

(جاری ہے)

افغاں حکام کے بقول اتوار کو یہ خودکش حملہ جس علاقے میں ہوا، افغان سکیورٹی فورسز نے حال ہی میں اسے عسکریت پسندوں کے قبضے سے واگزار کروایا تھا۔بتایا جاتا ہے کہ رواں ماہ کے اوائل سے طالبان کے ساتھ ہونے والی لڑائیوں اور ان کے حملوں میں سیکڑوں افغان سکیورٹی اہلکار مارے جا چکے ہیں جب کہ عسکریت پسندوں نے کئی ایک نئے علاقوں پر بھی قبضہ کر لیا ہے۔

ملک میں سلامتی کی بگڑتی ہوئی صورتحال پر حال ہی میں افغان حکومت نے قانون سازوں کو بتایا تھا کہ مئی کے پہلے ہفتے میں عسکریت پسندوں کے حملوں میں 252 سکیورٹی اہلکار ہلاک اور چار سو سے زائد زخمی ہوئے۔