بلدیاتی اداروں اور ان کے نامزد ا فسران کی کار کردگی اور دیگر معاملات کی چیکنگ بارے رپورٹ طلب

نامزد ممبران لوکل گورنمنٹ کمیشن ایکٹ پر عمل در آمد کرتے ہوئے ہر قسم کے مالی معاملات،چیکنگ اینڈ بیلنس اور دیگر معاملات کو یقینی بنائیں کسی بھی بلدیاتی ادارے میں قواعد و ضوابط اور قوانین کی خلاف ورزری پر بھی سخت کاروائی عمل میں لائی جا رہی ہے ‘وزیر بلدیا ت منشاء اللہ بٹ

پیر مئی 13:20

لاہور (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 28 مئی2018ء) صوبائی وزیر بلدیا ت محمد منشاء اللہ بٹ نے کہا ہے کہ حکومت پنجاب نے تشکیل کردہ لوکل گورنمنٹ کمیشن کے ممبران کو فوری طور پر بلدیاتی اداروں اور ان کے افسران کی کار کردگی اور دیگر معاملات کی چیکنگ کیلئے صوبہ بھر کے اضلاع تفویض کرنے کے بعد رپورٹ طلب کر لی گئی ہے ، ان نامزد ممبران لوکل گورنمنٹ کمیشن ایکٹ2013ء کی سیکشن 123 پر عمل در آمد کرتے ہوئے ہر قسم کے مالی معاملات،چیکنگ اینڈ بیلنس اور دیگر معاملات کو یقینی بناتے ہوئے ہر بلدیاتی افسران کی کارکردگی اور کام کرنے کی صلاحیت و مالی معاملات کے استعمال بارے حکومت کو رپورٹ پیش کر دی ہے ۔

لوکل گورنمنٹ کمیشن کے اجراء سے لوکل گورنمنٹ سسٹم حقیقی طور پر پایہ تکمیل ہو ا ہے۔

(جاری ہے)

انہوں نے کہا کہ کمیشن لوکل گورنمنٹ ایکٹ2013ء کی سیکشن 123 پر عمل در آمد کو ہر صورت یقینی بناتے ہوئے بلدیاتی اداروں کے استعمال ہونے والے فنڈز کا آڈٹ بھی کر وا کر رپورٹ حکومت کو ارسال کرنے کا عمل شروع کر دیا گیا ہے ۔اوربلدیاتی افسران کی کسی بھی شکایت کی انکوائری بارے بھی رپورٹکمیشن کو پیش کر دی گئی ہے جس پر سخت ایکشن لینے بارے احکامات جاری کر دئیے گئے ہیں۔

کسی بھی بلدیاتی ادارے میں قواعد و ضوابط اور قوانین کی خلاف ورزری پر بھی سخت کاروائی عمل میں لائی جا رہی ہے۔انہوں نے کہا کہ محکمہ بلدیات کے ہر ادارے کو دیگر اداروںکے لئے رول ماڈل بنانے اور انہیں عوامی خدمت کے مراکز بنا کر دور رس نتائج کے حصول کو ممکن بنا دیا گیا ہے۔انہوں نے کہا کہ خواتین کونسلرز بھی اب عملی طور اپنی صلاحیتوں کو اجاگر کرنے اور صوبہ کی ترقی میں اپنا حصہ ڈالیں اور خواتین کو درپیش مسائل کے خاتمہ کو اپنی اولین ترجیحات بنارہی ہیں۔

انہوں نے کہا کہ حکومت نے بلدیاتی نظام رائج کر کے ایک نئی تاریخ رقم کی ہے اس نظام سے کر پشن مافیا کا خاتمہ،سرکاری زمینوں و خزانہ کو اپنی ذاتی ملکیت بنانے والوں کے گرد آ ہنی ہاتھوں سے گھیر ا تنگ کر دیا گیا ہے۔ تعلیم کے حصول کے بغیرمعاشرے کو شعور یافتہ بنانا ممکن نہیں ۔وزیر اعلی پنجاب محمد شہباز شریف کے تیز رفتار تعمیر و ترقی کے و یژن کو اپنا نصب العین بنا کر ہی ہر سطح پر ترقی کے حصول کو ممکن بنایا جا سکتا ہے۔