یوکرائن میں روس کے صدر پوتن کے ناقد پناہ گزین صحافی کا قتل

صحافی کی لاش کی پوسٹ مارٹم رپورٹ آنے کے بعد تحقیقات آغاز کیا جائیگا ،ْپولیس حکام

بدھ مئی 21:50

کیف(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 30 مئی2018ء) روسی صدر پر تنقید کرنے پر قتل کی دھمکیاں ملنے کے باعث روس چھوڑ کر یوکرائن منتقل ہونے والے روسی صحافی آرکاڈی بیچینکو کو قتل کردیا گیا۔عالمی میڈیا کے مطابق مشرقی یوکرائن میں ایک روسی صحافی آرکاڈی ببچینکو کو اٴْن کے گھر میں نامعلوم فرد نے گولیوں کا نشانہ بنایا جس کے نتیجے میں صحافی شدید زخمی ہوگئے انہیں ہسپتال منتقل کیا جا رہا تھا کہ وہ راستے ہی میں دم توڑ گئے۔

روسی صدر پر شدید تنقید کرنے کی وجہ سے قتل کی دھمکیاں ملنے پر وہ گزشتہ برس روس سے یوکرائن منتقل ہوئے تھے۔۔پولیس کے مطابق صحافی کی لاش کی پوسٹ مارٹم رپورٹ آنے کے بعد تحقیقات آغاز کیا جائیگا تاہم ابتدائی شواہد سے لگتا ہے کہ انہیں پیشہ ورانہ ذمہ داریوں کے باعث قتل کیا گیا تاہم حتمی رائے مکمل تحقیقات کے بعد ہی دی جا سکے گی جبکہ مقتول صحافی کی اہلیہ شدت غم کے باعث بیان دینے کے قابل نہیں ۔

(جاری ہے)

واضح رہے کہ روسی صحافی ماضی میں چیچنیا میں جنگ لڑ چکے ہیں بعد ازاں انہوں نے صحافت کا پیشہ اختیار کیا اور روس کے صدر پوتن کے سخت ناقد کے طور شہرت حاصل کی جس پر انہیں قتل کی دھمکیاں ملنے لگیں اور وہ اہل خانہ کے ہمراہ 2017 میں روس سے یوکرائن منتقل ہوگئے۔ یوکرائن حکومت نے صحافی کے قتل کا ذمہ دار روسی حکومت کو ٹہرایا ہے۔