علامہ اقبال اوپن یونیورسٹی(اے آئی او یو)، پلان انٹرنیشنل اور جاپان انٹرنیشنل کوآپریشن ایجنسی)جائیکا(مشترکہ طور پر پاکستان کے دور دراز اور پسماندہ علاقوں میں سماجی و معاشی مجبوریوں کے باعث تعلیم سے محروم خواتین کو تعلیمی نیٹ میں لانے کے لئے مشترکہ کوشش کریں گے

اتوار جون 11:20

اسلام آباد ۔ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 03 جون2018ء) علامہ اقبال اوپن یونیورسٹی(اے آئی او یو)، پلان انٹرنیشنل اور جاپان انٹرنیشنل کوآپریشن ایجنسی)جائیکا(مشترکہ طور پر پاکستان کے دور دراز اور پسماندہ علاقوں میں سماجی و معاشی مجبوریوں کے باعث تعلیم سے محروم خواتین کو تعلیمی نیٹ میں لانے کے لئے مشترکہ کوشش کریں گے اور اُن کے لئے ابتدائی اور مڈل سطح کے تعلیمی پروگرامز، اساتذہ کے لئے تربیتی ورکشاپس/کورسسز، تشخیص کا نظام ، ٹیچنگ اورلرننگ میٹریل تیار کریں گے۔

معاہدے کی دستاویز پر جائیکا کے چیف ایگزیکٹو چیواوہاشی، پلان انٹرنیشنل کی جانب سے ایکٹنگ کنٹری ڈائریکٹر نایہ نور نے جبکہ اوپن یونیورسٹی کی جانب سے رجسٹرار ڈاکٹر محمد ضیغم قدیر نے دستخط کئے۔

(جاری ہے)

اے آئی او یو کے جاری بیان کے مطابق اس موقع پر ڈین فیکلٹی آف ایجوکیشن پروفیسر ڈاکٹر ناصر محمود، ڈین سائنس پروفیسر ڈاکٹر سید ظفر الیاس اور ڈائریکٹر بیورو آف یونیورسٹی ایکسٹنش اینڈ سپیشل پروگرامز ڈاکٹر تنزیلہ بھی موجود تھے۔

دستخطوں کے تقریب سے خطاب کرتے ہوئے یونیورسٹی کے وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر شاہد صدیقی نے کہا کہ اس معاہدے سے ملک کے دور دراز علاقوں میں ڈراپ آئوٹ گرلز کے لئے یونیورسٹی کے تعلیمی منصوبے کو مزید پذیرائی حاصل ہوگی۔۔ڈاکٹر شاہد صدیقی نے کہا کہ یونیورسٹی ننکانہ صاحب ، وہاڑی، چکوال ،کھاریاں اورٹھٹہ میں ڈراپ آئوٹ گرلز کے لئے مڈل سطح تک مفت تعلیم فراہم کررہی ہے۔

انہوں نے کہا کہ تحصیل سجاول )ضلع ٹھٹہ(میں مڈل پاس کرنے والی خواتین کی تقسیم اسناد تقریب میں انہوں نے دیکھا کہ مڈل پاس کرنے والی خواتین کی آنکھوں میں خوشی کی کرنیں تھی اور ا،ْن میں سے 377طالبات نے میٹرک پروگرام میں داخلہ حاصل کرنے کا اظہار کیا تھا۔ انہوں نے کہا کہ یونیورسٹی نظر انداز شدہ طبقات کو مرکزی دھارے میں شامل کرنے اور انہیں مفید شہری بنانے کے لئے مفت تعلیم فراہم کررہی ہے ان طبقات میں جیلوں میں مقید افراد، جسمانی معذوری میں مبتلا افراد ، خواجہ سراء اور ڈراپ آئوٹ خواتین بھی شامل ہیں۔