امریکا طینف کے فوجی اڈے فوری طورپر خالی کردے، شامی وزیرخارجہ

ہمارے ملک میں کہیں بھی ایران کاکوئی فوجی اڈہ موجود نہیں ہے،ولید المعلم کی گفتگو

اتوار جون 13:30

دمشق(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 03 جون2018ء) شام کے وزیر خارجہ ولید المعلم نے امریکا سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ طنف کے فوجی اڈے سے اپنی فوجیں واپس بلائے۔ غیرملکی خبررساں ادارے کے مطابق انہوں نے یہ بھی کہا کہ دمشق جنوب مغربی علاقے کو باغیوں کے کنٹرول سے بازیاب کرانا چاہتی ہے۔ جنوب مغربی شامی علاقے میں قنطیرہ اور دِرعا میں ابھی بھی باغی کنٹرول حاصل کیے ہوئے ہیں۔

روس،، امریکا اور اردن کے درمیان طے پانے والی ایک ڈیل کی وجہ سے یہ علاقہ جنگی حالات سے محفوظ قرار دیا جا چکا ہے۔ امریکا نے واضح کر رکھا ہے کہ اس علاقے میں کسی بھی خلاف ورزی کا سخت جواب دیا جائے گا۔ یہ امر اہم ہے کہ شام اور امریکا خانہ جنگی کے دوران کسی قسم کی کوئی مکالمت نہیں رکھتے۔شامی وزیرخارجہ ولید المعلم کا کہنا تھاکہ شام میں ایرانی لڑاکا فوج یا اس کے فوجی اڈے موجود نہیں ہیں۔

(جاری ہے)

گزشتہ ماہ اسرائیل نے اعلان کیا تھا کہ اس کے طیاروں نے درجنوں حملے کر کے شام بھر میں تقریبا? تمام ایرانی عسکری تنصیبات کو نشانہ بنایا تھا۔ المعلم نے بتایا کہ ایران کے فوجی یا اڈے شام میں موجود نہیں ہے، تاہم ایرانی عسکری ماہرین شامی فوج کی معاونت کر رہے ہیں۔ انہوں نے بتایا کہ دمشق حکومت کی درخواست پر ایران نے عسکری ماہرین شام میں تعینات کر رکھے ہیں۔