سویڈن، عام افراد کو کچل کر ہلاک کرنے کی پاداش میں ملزم کو عمر قید کی سزا

سالہ ملزم عقیلوف معاشرے کے لئے ناسور ہے،عدالتی ریمارکس

جمعہ جون 15:41

اسٹاک ہوم(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 08 جون2018ء) سویڈن میں عام افراد کو کچل کر ہلاک کرنے پر ٹرک ڈرائیور کو عمر قید کی سزا سنا دی،40سالہ ملزم عقیلوف معاشرے کے لئے ناسور ہے۔غیر ملکی میڈیا کے مطابق گذشتہ روز سویڈن کی ایک عدالت کی جانب سے اسٹاک ہوم میں چرائے گئے ایک ٹرک کو عام افراد پر چڑھانے کے جرم میں ایک ازبک شہری کو عمر قید سنا دی گئی ہے۔

اس واقعے میں پانچ افراد ہلاک جب کہ دیگر 14 زخمی ہو گئے تھے۔سویڈن کے دارالحکومت اسٹاک ہوم میں گزشتہ برس سات اپریل کو ازبک شہری رحمت عقیلوف نے چرانے کے بعد ایک ٹرک کو عام شہریوں پر چڑھا دیا تھا۔ رواں برس جنوری میں عقیلوف پر دہشت گردی اور اقدام قتل کا الزامات عائد کیے گئے تھے۔ عقیلوف نے عدالت میں اعتراف کیا تھا کہ اس نے یہ حملہ عراق اور شام میں متحرک اسلامک اسٹیٹ کے خلاف امریکی قیادت میں بین الاقوامی اتحاد کا حصہ بننے پر سویڈن کو سزا دینے کے لیے کیا تھا۔

(جاری ہے)

اس واقعے میں ایک برطانوی مرد، ایک بیلجیئن خاتون اور تین سویڈش شہری مارے گئے تھے، جن میں ایک گیارہ سالہ بچی بھی شامل تھی۔40 سالہ مجرم عقیلوف کی بابت جج راگنر پالمکوست نے کہا کہ اس حملے میں ملوث یہ واحد ملزم تھا۔ وکیل استغاثہ ہانس اہرمان مقدمے کی سماعت کے دوران اسٹاک ہوم کی ضلعی عدالت میں کہا تھا کہ ملزم معاشرے کے لیے خطرہ ہے۔ انہوں نے ملزم کو سنائی گئی سزا پر اطمینان کا اظہار کیا ہے، جب کہ دوسری جانب وکیل صفائی ژوہان ایرکسن کے مطابق ان کے موکل کو اس فیصلے پر افسوس ہے۔

وکیل صفائی نے کہا کہ وہ اس عدالتی حکم نامے پر اپیل کرنے یا نہ کرنے کا فیصلہ اس 145 صفحاتی حکم کو پڑھنے کے بعد کریں گے۔ واضح رہے کہ اس مقدمے میں وکیل استغاثہ نے ملزم کے لیے عمر قید کی سزا کا مطالبہ کیا تھا، جب کہ وکیل صفائی کا کہنا تھا کہ ملزم نے تفتیش میں تعاون کیا ہے، اس لیے اسے سزا دیتے ہوئے نرمی برتی جائے۔