سوشل میڈیا پر ویڈیو اپلوڈ کرنے کا جنون نوجوان کی جان لے گیا

نوجوان نے ویڈیو بنوانے کے لیے نہر میں چھلانگ دی، شوہر ڈوب گیا، اہلیہ ویڈیو بناتی رہی

Muqadas Farooq مقدس فاروق اعوان پیر جون 13:20

سوشل میڈیا پر ویڈیو اپلوڈ کرنے کا جنون نوجوان کی جان لے گیا
لاہور(اُردو پوائنٹ تازہ ترین اخبار۔ 18 جون 2018ء) ::سوشل میڈیا پر ویڈیو اپلوڈ کرنے کا جنون نوجوان کی جان لے گیا۔میڈیا رپورٹس کے مطابق اوکاڑہ کا رہائشی اپنے اہل خانہ کے ہمراہ عید کے موقع پر پکنک منانے نہر پر آیا تھا۔نوجوان نے ویڈیو بنانے کے لیے نہر میں چھالنگ لگا دی۔نوجوان تیرنے کی وجہ سے تھک گیا اور ڈوب کر جاں بحق ہو گیا۔جب کہ دوسرے اہل خانہ اسے محض مذاق تصور کر رہے تھے۔

جب کہ نوجوان کی اہلیہ ویڈیو بنانے میں مصروف رہی۔میڈیا رپورٹس کے مطابق نوجوان کی لاش تا حال نہیں ملی۔لاش دھونڈنے کے لیے ریسکیو آپریشن جاری ہے۔یاد رہے کہ اس سے پہلے بھی ایسے کئی واقعات سامنے آئے ہیں جس میں ویڈیو بنانے کا جنون لوگوں کو موت کے منہ پر لے گیا۔رواں ماہ ایک افسوسناک واقعہ دریائے نیلم کے پل پر پیش آیا جس میں طلباء کی ایک بڑی تعداد ویڈیو بنانے کے لیے پل پر اکھٹی ہو گئی۔

(جاری ہے)

پل اتنے لوگوں کی سکت برداشت نہ کر سکا اور ٹوٹ گیا۔۔جاں بحق ہونے والے طلباء کے گھر صفِ ماتم بچھ گیا تھا۔وادی نیلم کے اس پل کے بارے میں کہا جاتا ہے کہ اس پل پر سے بیک وقت زیادہ سے زیادہ چار افراد گذر سکتے تھے لیکن حادثے کے وقت اس پر تین تفریحی گروہوں کے لگ بھگ بیس سے بائیس افراد موجود تھے جن میں اکثریت طلبہ کی تھی۔ پانی کا بہاؤ تیز ہونے کی وجہ سے 12 طلبا و طالبات اس میں بہہ گیے جبکہ گیارہ زخمیوں کو مقامی افراد کی مدد سے بچا لیا گیا۔

اس حادثے میں دو افراد لاپتہ بھی ہوئے تھے۔جن کا تاحال کچھ پتہ نہیں چل سکا۔۔۔پاکستان کے زیر انتظام کشمیر کے وزیراعظم راجہ فاروق حیدر کا کہنا ہے کہ کشمیر میں تیزی سے بڑھتی ہوئی سیاحت کے پیشِ نظر دریاؤں کے کنارے تفریحی مقامات بنانے کے لیے حکومت کا اجازت نامہ لازمی قرار دے دیا گیا ہے۔ اس کے علاوہ کشمیر کی سڑکوں پر 400 کے قریب مقامات جہاں حادثات ہوتے ہیں ان کی بہتری کے احکامات جاری کیے ہیں۔ویڈیو ملاحظہ کیجئے: